ولسن فیس بک پر لڑکی کا نام آئی ڈی بنا ہوا تھا لیکن اس نے فوٹو فوٹو فائل کیا تھا

ولسن فیس بک پر لڑکی کا نام آئی ڈی بنا ہوا تھا لیکن اس نے فوٹو فوٹو فائل کیا تھا

لندن: ایک سوویت شخص سے چار سال تک کی آزمائش 100 سے زیادہ عمر کی جنسی جرائماحی ہوتی ہے۔

عالمی خبر رسالہ کے مطابق 36 سال کی ڈیوڈ ولسن نے اس کی پہلی سال کی ایک لڑکی کی آئی ڈی بنا رکھی تھی جس کا وہ 4 سال سے 14 سال کے دوران کوٹ میں تھا۔

برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجینسی کی بنیاد پر ملزم لڑکی کی نام بنائی ہوئی ہے جس کی وجہ سے فیس بک آئی ڈی کو انٹر نیٹ سے حاصل کی جاسکتی ہے جس میں دیر کی تصاویر بھیج دی گئیں۔

ملز م ڈائن ڈاٹ کوہلا پھسلا نے دوست بناتا اور ایک بار اعتماد میں لیا اور بعد میں ان کی قابل تصاویر اور ان کا منگاتا رہا۔ ایک بار اس مواد کو ہاتھ سے لے جانے کے بعد ملزم ان کو کو بلیک میل کرنا شروع کردے گا اور پندرہ مرتبہ کو دیکھنے کی ضرورت ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اس نے اپنے بھائیوں کو بھی استعمال کیا تھا۔

اپسوچ شہر میں پیشہ ور خواتین ملزم نے 51 مرتبہ کوڈ کو 96 بار غیر قانونی طور پر قابل مواد کے طور پر استعمال کرنے کا اعتراف کیا ہے۔ اس کی جلدی عمر میں 4 برس سے 14 برس تک بتائی جاتی ہے۔

کرائم ایجینسی کی بنیاد پر ملزم کی بلیک میلنگ سے مشغول ہونے والے افراد نے ان کی تعداد 500 سے زیادہ رکھی ہے اور ارسلال کنیز اور ان کے مذاہب کا مقابلہ کرنا تھا۔
این سی اے کے مطابق ولسن پہلی مرتبہ 2017 میں فیس بک کی نظر آتی ہے جب 12 سے 15 کے اکاؤنٹس میں اس کے بنائے ہوتے ہیں جب ایک 13 سال کی لڑکی کے اکاؤنٹ میں نازیبا تصاویر بھیجتی ہیں۔

ان پیغامات کی تفسیرات نے سی سی اور امریکہ کے لاپتا اور متاثرہ مرکز کا مرکز ایم سی سی کو فراہم کیا جس کے بعد ولسن کو سراغ حص کرے میں غلطی ہوئی۔ ولسن کو آئندہ برس 12 جنوری کو سزا سنائی ہو گی۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here