پرندوں اور کتوں کے بعد کی پہلا موقع یہ ہے کہ مقناطیسی کے میدان میں چھٹیوں کی تعداد میں سب سے زیادہ مقام حاصل ہوتا ہے۔  (فوٹو: وکی پیڈیا)

پرندوں اور کتوں کے بعد کی پہلا موقع یہ ہے کہ مقناطیسی کے میدان میں چھٹیوں کی تعداد میں سب سے بڑا مقام حاصل ہوتا ہے۔ (فوٹو: وکی پیڈیا)

برلن: جرمن سائنسدانوں نے زیمبیا کی جنگلات میں زیر زمین زمین کی ایک قسم کی چھچھونڈر اگرچہ قریب قریب اندھی ہے لیکن پھر وہ خود بھی آنکھوں سے مقناطیسی فیلڈ کو دیکھ رہی ہے۔

تحقیقی مجلے ” جرنل آف دی رائل سوسائٹی انٹرفیس ” تازہ شمارے میں شائع ہونے والی اس تحقیق جرمنی کی یونیورسٹی آف ڈوئلسبرگ ایسن کے ڈاکٹر کائی آر کاپر اور ان کے ساتھیوں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

اب تک ہم کئی کئی پرندوں کے بارے میں جانتے ہیں کہ وہ زمین کا مقناطیسی فیلڈ ہے جب ہم ہزاروں میل دور کی نقل مکانی کے ساتھ رہتے ہیں۔

حالیہ تحقیقات سے یہ پتہ چلتا ہے کہ مقناطیسی فیلڈ کو بھی معلوم نہیں ہوتا ہے۔ ” انسلز مول ریٹ ” (انسل کا چھلنی چوہا) کہ ماہرین کو بھی گمن تھا لیکن اس کی تصدیق نہیں ہوئی۔

چھوٹے چھوٹے بٹن جیسی آنکھوں والی چھچھوندریں زمین کے اندر لمبی لمبی سرنگیں بنا کالونیوں کی شکل میں رہتی ہیں۔

ایک کالونی میں قریب دس بجے رہائشی رہائشی تعداد میں کالونیاں آپ کے رابطے کے سلسلے میں ایک بار پھر قریب کالونیوں میں آنا جانتی رہتی ہیں۔

لیکن خاص بات یہ ہے کہ ہر کالونی میں چھچھونڈروں میں ہمیشہ ہی رہنا ہوتا ہے جنوب مشرقی مشرقی سمت ہی بنٹی ہوتی ہے۔

ماہرین حیرت کی بات ہے کہ اس کی آنکھوں سے صرف روشنی اور تاریکی میں فرق ہے ، یعنی قریب قریب نابینا ہے ، وہ زیر زمین گھپ اندھیرے میں جس طرح سے درست سمت کی حیثیت رکھتی ہے وہ صرف جنوب مشرقی سمت کا انتخاب کرتی ہے۔ ہے۔

اسی طرح کے سائنسدانوں کا خیال تھا کہ چھٹیوں میں بھی ، پرندوں کی طرح ، زمینی مقناطیسی میدان سے لے کر رہ جانے والی قدرتی نوعیت کی بات ہے۔ لیکن یہ جسمانی طور پر نہیں ہے؟ اس کے بارے میں کچھ بھی نہیں تھا۔ البتہ بعض ماہرین کی شبیہہ کی آنکھوں پر تھی ، لیکن اس کے پاس کوئی ٹھوس ثبوت موجود نہیں تھا۔

جرمن سائنسدانوں نے اسے بے رحمانہ ” انداز اختیار کیا ”: اس نے محتاط سرجری سے تجربہ گاہک میں رکھی ہوئی تھی۔ آنکھوں سے ہونے والی حرکات کے بعد ، اس میں بھی کوئی فرق نہیں پڑھا تھا اور اس سے پہلے کہ وہ سرنگوں میں کھڑے ہوسکتے ہیں ، ایک دوسرے کے ساتھ چھیڑ خانی ہوتے ہیں اور اکثر لوگوں میں مصروف رہتے ہیں۔

جب ماہرین کو یقین ہے کہ آنکھوں سے اس وقت چھٹیوں نے معمول کی زندگی گزار دی ہے ، تو اس نے تجربہ گاہکوں کے اندر قدرتی ماحول سے ملٹی جلتی کی جگہ تیار کرلی ہے ، جس کا ایک جسمانی مقناطیسی میدان ہے۔ یہ ماہرین کنٹرول ہے اور اس کی سمت بھی تبدیل ہوگئی ہے۔

اس جگہ پر اس چھچھنڈوں میں سرنگوں کھود کر زمین کے اندر رہائش پذیر اور زندہ رہنے کی بھی ہے۔ یہاں آنکھیں چھٹیوں کے ساتھ چھٹی رہتی ہیں جن کے ساتھ آنکھیں بھی زندہ رہتی ہیں۔

ماہرین کو مشاہدہ ہوا چھچھوندوندر جن جن آن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن جن مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو مصنوسیسیسیسیسیسیسیسیسیسیسیسیسی میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو مصنو تو تو تو تو مصنو مصنو حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب حساب سے سے سے حساب سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے سے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے تھے

بر ان بر بر بر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر بغیر میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان میدان کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی کوئی اثر؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛؛ اثر؛؛؛؛؛؛ ہوا اور یا اس سے کوئی فرق نہیں پڑا ہے۔ اور وہ کبھی بھی اُدھر کھوڈے۔ اس سے ثابت ہوا کہ آنکھوں کی غیر موجودگی چھٹیوں میں مقناطیسی فیلڈ کو کوٹنگ میں ہے اور اس کی نشاندہی کرنے کے قابل بھی نہیں ہیں۔

اس تحقیق کے اختتام پر ماہرین نے تجزیہ کیا ہے کہ وہ مذاق کررہے ہیں چھچھندروں کی آنکھوں کا معائنہ طاقتور الیکٹرون خردبین اور طیف نگاری کی جدید تکنیک کا کیا پتہ ہے یہ صرف 2 ملی میٹر جتنی چھوٹی چھوٹی چھوٹی آنکھوں میں مقناطیسی کا میدان ہے۔ واقعی ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here