'ریوگو' نامی شہابی پانی کے علاوہ نامیاتی مرکبات (آرگینک کمپاؤنڈز) بھی دریافت گئے ہیں۔  (تصاویر بحوالہ: JAXA)

‘ریوگو’ نامی شہابی پانی کے علاوہ نامیاتی مرکبات (آرگینک کمپاؤنڈز) بھی دریافت گئے ہیں۔ (تصاویر بحوالہ: JAXA)

ٹوکیو: جاپانی خلائی ایجنسی ‘جاکسا’ اس نے ‘ریوگو’ نامی شہابی (ایسٹرایڈ) سے زمین پر لکھے ہوئے پتھروں اور کنکروں کی تصاویر جاری رکھی ہوئی تھیں جو اس خلائی مشن ” ہایابوسا 2 ” نے پچھلے سال جمعہ کے روز کیا۔ اس خلائی مشن پر 15 کروڑ ڈالر (24 ارب ڈالر) لاگ ان آئی۔

اگرچہ یہ صرف 5 ملی گرام وزنی ہے لیکن اس میں سائنسی تحقیق بہت زیادہ ہے۔

جاپان کا حیابوسہ 2 کو بطورِ خاص ‘ریوگو’ شاہی کی مٹی اور کنکروں کی نمونہ جمعہ کی زمین پر لیانیے کے پاس گیا تھا۔

البتہ ، خوش قسمت سے اب بھی ” حیابوسا 2 ” میں خاصا اندھن بچا لیا ہے ، اس نے اس خلائی مشن میں مزید توسیع کی سزا سنائی ہے۔

اپنے توسیع شدہ پروگراموں کے مطابق ، یہ خلائی مشن جولائی 2026 میں ” سی سی 21 ” کہنے والے ایک چھوٹے سے شہابی (ایسٹرائڈ) کے قریب پہنچے۔

اس کے بعد ، اگلے دو سالوں میں ، اس سے زیادہ دو مرتبہ کی زمین قریب آگئی ہے اور جولائی 2031 میں ‘1998 کی 26 وائی 26’ تھی جو کہ قریب قریب پہنچے تھے اور اس کا مشاہدہ ہوگا۔ ۔

اس کے نتیجے میں خلا کی تاریکی کا فائدہ اٹھانا پڑتا ہے نظام شمسی سے باہر کے سیاروں (وضاحت) کا مشاہدہ بھی ہوتا ہے۔

‘ریوگو’ ہی کیوں؟

بتاتا ہوا چل رہا ہے کہ ریوگو شہابی کا پورا نام ‘162173 ریوگو’ جو دوسرا شہاب کی کھانا خاص طور پر مختلف ہے۔

شہاب کھانے میں عام طور پر سلیکن سے نکلنے والے مرکبات (سلیکیٹس) اور مٹی کے علاوہ نکلنا اور لوشن جیسی دھاتیں بھی معمولی مقدار میں پائی جاتی ہیں۔

اس کی برعکس ‘ریوگو’ میں کاربن اور کاربن پر مرکب کی مقدار خاص طور پر زیادہ ہے جن کی وجہ سے اس کا رنگ بھی معمولی سے زیادہ سیاہ فام مائل ہے۔

لیکن بات یہ ہے کہ پانی کے علاوہ کچھ غیرضروری مرکبات (آرگینک کمپاؤنڈڈیز) بھی دریافت نہیں ہوئے ہیں۔

اسی طرح کے سائنسدانوں کو امید ہے کہ ‘ریوگو’ سے لائے ان کنکروں اور پتھروں کی تحقیق سے زمین پر زندگی کی ابتداء اور نظام شمسی ارتقائی مراحل سے متعلق جاننا بھی بہت مددگار حصہ ہے۔

زمین کی زندگی کی ابتداء کے بارے میں یہ بھی واضح ہے کہ آج کے بارے میں چار ارب سال پہلے ، زمین پر شہاب کی دکانیں اور دیم دار اسٹارنگز کا بوسٹھڑ بارش تھی جس میں پانی سے زیادہ حیاتیاتی کیمیائی مرکبات شامل تھے۔ (بایوکیمیکلز) بھی شامل ہیں جو زندگی کے وجود کی بنیاد ہے۔

شہاب کھانے اور دوم دار ستاروں کی اسی بوچھاڑ کے زمانے میں زمین کا وجود موجود تھا ، زمین کی زندگی اور زندگی کی شکل بھی اس کے ہیرو میں رہتی تھی۔

‘ریوگو’ اور اسی طرح کی دوسری دکانوں پر بھی کھانا کھایا جاسکتا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here