یہ واقعی انتہائی سنگین ہے کیونکہ سافٹ ویئر کی خرابی کی وجہ سے وہ سیکیورٹی کے بارے میں نہیں دیکھ سکتے ہیں ، کھانا مہمانوں کے پاس رہتا ہے۔  (فوٹو: فائل)

یہ واقعی انتہائی سنگین ہے کیونکہ سافٹ ویئر کی خرابی کی وجہ سے وہ سیکیورٹی کے بارے میں نہیں دیکھ سکتے ہیں ، کھانا مہمانوں کے پاس رہتا ہے۔ (فوٹو: فائل)

ایریزونا: امریکی ریاست ایریزونا میں سیکٹر ڈاکٹر قیدی رہائش پذیر تاریخ کے گزرنے والے مہینوں سے قید ہیں ، جس وجہ سے کمپیوٹر پروگرام کی خامیاں جنگی قریب قریب ڈیڑھ سال کے بعد بھی دور نہیں ہوئیں۔

خبروں کے مطابق ” ایریزونا ڈیپارٹمنٹ آف کریکشنز ” (جیل خانہ جات) پوری اسٹیٹ کی جیلوں میں قید دکان سے متعلق معلومات اور اس کی رہائش سے متعلق امور کو خودکار رپورٹوں کے بارے میں 2019 میں ایک خصوصی سافٹ ویئر ” ایریزونا کریکشنل انفارمیشن سسٹم ‘ ‘(اے سی آئی ایس) بنوایا تھا۔

اگر اس سافٹ ویئر کی تیاری پر ایریزونا انتظامیہ کی 24 ملی ڈالر کی لاگت آئے گی تو جانچ پڑتال کے دوران اس میں ہزاروں لوگوں کی تکلیف کا سامنا کرنا پڑا جن کے بارے میں وہ عملے کے پاس موجود رہا۔

تاہم ایریزونا کے اجلاس جیل خانہ جات کے اعلی درجے کے عملے کی تمام شکایات اور تحفظات کو نظرانداز کہتے ہیں ، نومبر 2019 سے یہ سافٹ ویئر استعمال کرنا شروع کیا گیا ہے۔

تکنیکی ماہرین کی بات یہ ہے کہ ” اے سی آئی ایس ” میں 14 ہزار ٹیکنیکل خامیاں سامنے آرہی ہیں جنوری کے بارے میں اعلی درجے کی کوکیز بھی آگئی۔ اس مسئلے کے بارے میں ہر کام کو کو ‘خاموش جگہ’ کے حکم کے بارے میں کہا گیا ہے کہ اس سافٹ ویئر پر خط رقم رقم خرچ ہوچکی ہے۔

اسی دوران امریکیوں نے بھی قید والے کھانے کی رہائش سے متعلق ایک نیا قانون بھی منظور کرلیا ، جس کے تحت کچھ مخصوص شرائط پر آنے والے لوگوں کو بھی قید کی دکان میں سزا نہیں ملتی تھی۔

لیکن ” اے سی آئی ایس ” سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہونے کی بھی توقع کرسکتا ہے کہ اس پر عملدرآمد نہیں کیا جاسکتا ہے۔

اس صورت حال میں 16 ماہ سے جاری ہے اور ایریزونا کی جیلوں میں سیکشن والے قیدی صرف سافٹ ویئر کی خرابی کا سبب بن گئے ہیں ، حالانکہ ان کی رہائش کا وقت بھی گزر گیا ہے جب وہ مہینے میں گزرے تھے۔

ویسے تو سافٹ ویئر کی خرابی کی وجہ سے دنیا میں روزانہ کی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن یہ حقیقت اس سے مختلف ہے اور زیادہ سنگین کی وجہ سے سافٹ ویئر کی خرابی ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here