وفاقی وزیر ، خفیہ ایجنسی کے افسروں کی گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا ، فوٹو: فائل

وفاقی وزیر ، خفیہ ایجنسی کے افسروں کی گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا ، فوٹو: فائل

کابل: افغانستان کا دارالحکومت 24 گھنٹوں کے بعد 5 بم دھماکوں سے گونج اٹھا میں مجموعی طور پر 11 افراد ہمیشہ اور 7 زخمی رہتے ہیں۔

افغان میڈیا کے مطابق پانچ گھنٹوں میں دارالالکومت میں پانچ گھنٹے کے سب سے بڑے واقعات میں آج صبح کے وقت ، حملہ آوروں میں سیکیورٹی کے اہلکار 11 افراد ہمیشہ اور 7 حملہ آور ہوتے ہیں۔

آج صبح تین ہفتہ کے دن ، پہلے تعطیل میں پولیس کی گاڑی کو دوسرے گھماؤ میں جمیعت اصلاحات کی گاڑی کا کوٹ اور تیسرے حادثے میں دو افراد کی گاڑی تھی ، جس میں مجموعی طور پر جمیعت اصلاحات کرنے والے رہنما 11 افراد کو ہمیشہ اور 7 مشتبہ افراد کو روکتے تھے۔ ۔

یہ خبر پڑھیں: افغانستان میں وزیرملک کی گاڑی کو بم دھماکے میں لے جایا گیا

روزنامہ یہ بھی تھا کہ کابل میں بھی دوپھٹے ہوئے تھے ، پہلوؤں کی وجہ سے افغان فوج کی گاڑی چل رہی تھی جس میں آرمی آفیسر اور مستقل طور پر ہمیشہ شامل رہتے تھے جب وہ وفاقی وزیر مملکت رہتے تھے۔ محفوظ کریں۔

اسی طرح کی روز مرہ کے دارالحکومت میں ٹارگٹ کلنگ کے 5 واقعات میں سابقہ ​​کم عمر اور افغان خفیہ ایجنسی کے اہلکار سمییت 5 افراد کو قتل کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ افغانستان میں پوری دنیا کے ایکشن کے بارے میں بھی اظہار خیال کیا گیا ہے اور اس کے ساتھ ہی ذوالفقار نے بھی اس موقع پر اپنے آپ کو سمجھایا تھا۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here