آئی سی سی بی ایس کے ذیلی تجربہ گاہکوں میں حکومت سندھ کی فنکاری سے ایک لاکھ دس ہزار کورونا ٹیسٹ چل رہے ہیں۔  (فوٹو: ایکسپریس نیوز)

آئی سی سی بی ایس کے ذیلی تجربہ گاہکوں میں حکومت سندھ کی فنکاری سے ایک لاکھ دس ہزار کورونا ٹیسٹ چل رہے ہیں۔ (فوٹو: ایکسپریس نیوز)

کراچی: بین الاقوامی شہر مرکز کیمیائی اور حیاتیاتی علوم (آئی سی سی بی ایس ایس) جامعہ کراچی کے علاقے اور کوڈی آرڈی نیٹر جنرل کومسٹک ، پروفیسر ڈاکٹر محمد اقبال چوہدری کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر پنجوانی سینٹر سالماتی طب اور ادویاتی تحقیق ، جامعہ کراچی کچھ عرصہ پہلے نہیں تھا۔ توقفہ وسائل بروئے کار لوازمات محدود پیمانے پر کورونا وائرس ٹیسٹ سروس کا دوبارہ آغاز ہوا۔

اس وقت ڈاکٹر پنجوانی سینٹر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی جدید بایو سیفٹی لیول تھری لیبارٹری میں داخل ہوجائیں گے۔ اگر صوبائی حکومت کی جانب سے بنیادی فنڈ سازی جاری رہتی ہے تو روزانہ دو ہزار تک رسائی جاسکتی ہوتی ہے۔

پروفیسر ڈاکٹر اقبال چوہدری ہفتہ کو نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی ، جامعہ کراچی میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عالمی وبا کے شہروں سے تعلق رکھنے والے شہروں میں محدود پیمانے پر کورونا وائرس ٹیسٹ سروس کا دوبارہ آغاز قومی محل وقوع میں ایک مستحسن عمل ہے۔

انہوں نے کہا کہ چند ماہ قبل سندھ حکومت نے ڈاکٹر پنجوانی سینٹر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی کی جدید بایو سیفٹی لیول تھری لیبارٹری کی تکمیل کی تھی۔ زیادہ سے زیادہ پی سی آر پر مبنی کورونا وائرس کے اعلی درجے کی تحقیقات استعداد ثابت کرچکا ہیں ، ” یہ ایک دوسرے سے اعلی وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ اور صوبائی وزیر صحت سے بچنے والے فضل پیچکو کے مسلسل تعاون کو بھی سراہا اور ان کے ساتھ ہیں۔ کا شکریہ ادا کیا۔

ڈاکٹر اقبال چوہدری نے کہا کہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی ایک جدید تحقیقی ادارہ ہے جو ڈاکٹر پنجوانی سینٹر ، جامعہ کراچی کے زیر انتظام کام ہے۔ یہ تمام تجربہ گاہک عالمی ادارہ صحت جہاں متعین معیارات موجود ہیں جہاں وائرلیس سے متعلق تقریباً تمام امتحانات کو حاصل کرنا موجود ہے۔ اس میں کچھ ماہرین اور جدید پی سی سی مشینیں اور دیگر جدید ساز و سامان کی نمایاں ترین خصوصیات شامل ہیں۔



Source by [author_name]

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here