امریکی خارجی کمپنیوں پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا ہے (فوٹو ، فائل)

امریکی خارجی کمپنیوں پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا ہے (فوٹو ، فائل)

بیجنگ: چین نے تائیوان کو کوشاں فروخت کرنے والی امریکی کمپنیوں پر پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا ہے

عالمی خبر رسالہ پیرس چینی دفتر خارجہ کی ترجمان زاؤ لیجیان نے پریس بریفنگ میں صحافیوں کو بتایا کہ چین کو کوٹ سے قومی محافظوں کا پابندیاں عائد کرنا بڑھتی ہوئی اقوامت کی ضرورت نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اور تائیوان کے درمیان معاہدے ہتھیار فراہم کررہے ہیں جو بڑی کمپنیوں کو لاکیڈ مارٹن ، بوئنگ ڈیفینس ، ریتھیون اور دیگر پابندیاں عائد کرنے کے لئے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تائیوان کوامریکہ کی اپنی کمپنیوں میں ہر شخص کی مصنوعات سے وابستہ افراد کوٹھی پابندی سے دوکانوں تک پہنچنا پڑے گا۔ ترجمان کی طرف سے پابند کھانے کی اشیاء سے پتہ نہیں ہوتا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ نے تائیوان کو سینسرز ، میزائل اسٹسٹم اور گولہ بارود وغیرہ میں 1.8 بلین ڈالر کے جنگی سازو سامان ساز و سامان کے معاہدے کی منظوری دی تھی۔ دیگر ممالک کی طرح امریکہ کے تائیوان کے ساتھ باقاعدہ سفارتی تعلقات نہیں ہیں۔ اگرچہ قانون کے تحت امریکہ اس کی دفاعی ضروریات فراہم کرتا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: چین کو کوئی خطرہ نہیں ہے

دوسرا چین نہیں صرف تائیوان کو اپنا حصہ سمجھنا ہی طاقت کا استعمال ہے اور یہ بھی جائز انتظام ہے۔ چین کے انتظامیہ نے تائیوان کو دفاعی سازوسامان کی فراہمی کی پیش کش کی ہے جو جنوبی بحیرہ چین ہے ، ہانگ کانگ اور انسانی حقوق کا تجربہ 14 محاذ کھلے ہوئے ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیں: چین نے ایک ساتھ 5 جنگی مشقوں کا آغاز کیا

چین کی جن کمپنیوں کی پابندی کا اعلان کیا گیا ہے اس سے عالمی خبر رساں رابطے پر بات کرتے ہیں اور بوئنگ اور لاکیڈ مارٹن سے بات کرتے ہیں جو امریکی حکومت کے ضابطے کی پابندیاں ہیں اور ان کی چین میں موجودگی کی خاصیت ہے۔ ۔ ریتھیون نے فوری طور پر کوئی جواب نہیں دیا۔

یہ خبر بھی پڑھیں: صدر شی جن پنگ کی چینی فوج کو جنگ کی تیاری کی ہدایت

یاد رہے اس سے پہلے کے تائیوان اور امریکہ کے مابین بڑھتے ہوئے مراسم پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے چینی صدر نے اپنی فوج کو ممکنہ جنگ کی تیاری کے لئے ہدایت کی تھی۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here