چین کا خلائی مشن 16 یا 17 دسمبر کو زمین پر واپس آگیا ، فوٹو: ٹویٹر

چین کا فلائی مشن 16 یا 17 دسمبر کو زمین پر واپس آگیا ، فوٹو: ٹویٹر

بیجنگ: چین کا تیسرا روبوٹک مشن چینگ 5 چاند پر کامیابی سے اتر گیا اور آئندہ دو ہفتوں میں پتھروں کے نمونے لے کر واپس آئے۔

عالمی خبر رسالہ چین کے خلائی مشن نے چین کی سطح پر لینڈنگ کی ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ چاند کی نمونہ زمین پر لانا ہے اور اگر اس مشن کی سرگرمی ہوسکتی ہے تو وہ 50 برس کے بعد چاند سے نمونہ زمین پر چلے جائیں گے۔

اس سے پہلے امریکہ اور سوویت یونین کے خلائی مشنز بھی چاند سے نم زمین تھے ، 1969 سے 1972 کے امریکی خلاباز چاندی 382 کلوگرام چٹانوں اور دیگر نمونوں پر واپس آئے تھے۔

چین کا خلائی مشن 2 اسپیس کرافٹ لینڈر اور چاندی گاڑی پر ایک دوسرے کے اوپر پہنچ گیا ہے۔ اس میں سے ایک روبوٹک ہاتھ کا استعمال کرتے ہوئے چاندی کی سطح پر کھدائی کر کے چٹانوں کا نمونہ جمعہ کے دن ہو گیا تھا جس کے بعد اس کے بعد اس کو لے جایا گیا تھا۔

چاند سے نمونہ جمعہ کے بعد خلائی مشن چینگ 5 زمین کی سیر کر رہے ہیں اور 16 یا 17 دسمبر کو زمین پر پہنچ رہے ہیں۔ اس چین کا چاند بھیجنے والا تیسرا روبوٹک مشن ہے لیکن بار بار مشن چاند سے نمونے کی بات ہے۔

یوں تو چاند سے نمونے اس سے قبل روس اور امریکی مشن بھی لا چکے ہیں تاہم چین کی خلائی گاڑی ان سے کئی گنا بہتر نمونے لائے گئی جن سے چاند کی تشکیل اور وہاں ہونے والی آتش فشانی سرگرمیوں سے متعلق اہم معلومات ملنے کا امکان ہے.



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here