کورونا وائرس وبا کی روک تھام کے اقدامات پاکستان عالمی سطح پر ہیں (فوٹو ، فائل)

کورونا وائرس وبا کی روک تھام کے اقدامات پاکستان عالمی سطح پر ہیں (فوٹو ، فائل)

لندن: عالمی ایجوکیشن سے کورونا وائرس کا مقابلہ جاری ہے جس کی جاری کردہ ممالک کی درجہ بندی میں ایشیا میں سب سے پیچھے رہ گئے ہیں۔

بین الاقوامی شہروں میں بلوم برگ کی موجودہ پیشقدمی ریزیلیئنس یا موسم کی مزاحمت کے عنوان سے 54 ممالک کے درجہ حرارت کی درجہ بندی جاری ہے۔ اس درجہ بندی سے ان ممالک کی طرف سے وبا کوثر تاثرات میں قابو کرنے کے اقدامات کو بنیاد پر لیا جاتا ہے۔

جاریہ درجہ بندی پاکستان میں 54 ممالک میں 27 ویں نمبر پر ہے جب ہندوستان کی فہرست میں 12 ایشیائی ممالک شامل ہیں اور اس کے نتیجے میں درجہ بندی میں 34 ممالک کی تعداد 34 ہوگئی۔

شہریوں کے مطابق اس درجہ بندی میں بنیادی طور پر اس ملک کا کاروبار ہوتا ہے اور سماجی سرگرمیوں کی دکانیں کم متاثر ہوتی ہیں۔

درجہ بندی میں 200 ارب ڈالر کی 53 معیشتوں کا سروے ہوا۔ جس میں وائرس کے معاملات کی تعداد ، شرح اموات ، آزمائشی کیڑے ، ویکسین کی فراہمی کے معاہدے ، مقامی صحت عامہ کے نظام کی کارکردگی ، معیشت اور شہریوں کی نقل اور حرکت کی آزادی پراماک ڈاؤن لوڈ ہونے والے تجربے کی پہلو کا جائزہ بھی لیا گیا۔

کورونا وائرس سے متعلقہ کارکردگی پر جاری رہنے والی جائزے میں نیوزی لینڈ پہلے ، جاپان دوسرا اور تائیوان تیس نمبر پر ہے جب میکسیکو کی کارکردگی سب خراب ہوئی ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: امریکہ کورونا کے پاکستان کے اقدامات ، عالمی ماہرِاقتصادیات

رپورٹ میں بیان کیا گیا ہے کہ بھارت میں صرف ایک ماہ کے دوران کیسز کی تعداد 93 سے 1 لاکھ یومیہ ہے۔ بھار ت فی فی کورونا میں شرح اموات 1 اعشاریہ 2 فی صد ہے جب کورونا سے متاثرہ افراد میں ہر دس لاکھ افراد میں سے 97 افراد موت کے واقعہ کا شکار ہیں۔ بھارت میں ٹیسٹ کی شرح 4 اعشاریہ 2 ہے۔

واضح اس سے پہلے عالمی ادارہ صحت دیگر عالمی سطح پر اور ماہرین پاکستان کے کورونا سے نمونہ حکمت عملی پر اثر انداز ہونا اعتراف کرچکے ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here