'دی پالشڈ مین'نامی بین الاقوامی شہروں میں انتخابی مہم چل رہی ہے اور اس سے زیادہ تر لوگ بھی لڑتے رہتے ہیں۔

‘دی پالشڈ مین’نامی بین الاقوامی شہروں میں انتخابی مہم چل رہی ہے اور اس سے زیادہ تر لوگ بھی لڑتے رہتے ہیں۔

پاکستان شوبز اور اسپورٹس سے تعلق رکھنے والے درد مندوں نے ستارے کے ساتھ جنسی زیادتی کا مظاہرہ کیا ہے ، نیل پالش لگاکر تصاویر میڈیا میڈیا پر ہیں۔

‘دی پالشڈ مین’نامی بین الاقوامی شہروں میں انتخابی مہم چل رہی ہے اور ان میں سے ہر ایک کے درمیان لڑائی جاری رہتی ہے۔ دنیا بھر میں پائے جانے والے لوگوں کے ساتھ ہونے والے واقعات کے بارے میں آواز اٹھانے کی باتیں ‘پالشڈ مین’ نامی بین الاقوامی مہم کا حصہ بنتی ہیں جو پاکستان کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے درد زدہ مرد حضرات کے ساتھ ایک انگلی میں نیل پالش لگاکر کے ساتھ اظہار خیال کرتے ہیں۔ یکجہتی واقعات ہیں۔

اس مہم کی شروعات آسٹریلیا سے لے کر 2014 میں ہوا میں ہوا تھا اور اب آہستہ آہستہ آہستہ دنیا بھر میں پھل چکی ہے۔ دنیا بھر میں مرد وخواتین ہر سال 15 اکتوبر کو ایک انگلی کیناخن پر نیل پالش لگاکر اپنی تصویر میڈیا میڈیا پر چلتے ہیں اور اس آگاہی مہم کا حصہ بن جاتے ہیں۔

وسیم اکرم نے اس مہم کے حصہ میں حصہ لیا تھا ، لیکن وہ ہر سال کی عمر میں سب سے بڑا ہوتا ہے۔ وسیم اکرم ان کی ایک انگلی پر نیل پالش لگاکر تصویر میڈیا میڈیا ہے ، باقی تمام لوگوں کو بھی اس مہم کا حصہ بننے کی دعوت دی گئی تھی اور اس مہم کا حصہ بننے کے ساتھ ہی اظہار خیال کیا گیا تھا۔

وسیم اکرم کی اہلیہ شنیرا اکرم نے بھی اس مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور پالشڈ مین ، پاکستانی مرد حضرات کا مقابلہ ، لڑائی لڑی ، پاکستانی مین سے نامور اور چائلڈ ابیوز جیسے ہیش ٹیگ کا استعمال ہوا۔

اداکار ہمیوں سعید ، شعیب ملک ، سابقہ ​​پاکستانی اسکواش چیمپین جہانگیر خان ، شہزاد رائے ، بلال اشرف ، میکال ذوالفقار ، فخرعالم ، یوٹیوببر شاہ ویر جعفری ، متعدد معروف شخصیات نہیں ، نیل پالش لگاکر کے ساتھ ہونے والے واقعات کی وجہ سے ان کا مقابلہ ایک بار پھر ہوا۔

ہمارے پیغامات میں اس شخص کی شخصی کا کہنا تھا کہ ہر دن میں پوری دنیا میں لاکھوں آدمی ہوتے ہیں ، لیکن کسی بالغ مرد کے ہاتھ نہیں ہوتے ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here