یہ کمپیوٹر 1976 ء میں ایپل کارپوریشن کے بانیوں ، اسٹو جابز اور اسٹو ووزنیاک کے ہاتھوں سے تیار تھا۔  (فوٹو: آر آر آکشن)

یہ کمپیوٹر 1976 ء میں ایپل کارپوریشن کے بانیوں ، اسٹو جابز اور اسٹو ووزنیاک کے ہاتھوں سے تیار تھا۔ (فوٹو: آر آر آکشن)

بوسٹن: امریکہ کے ایک نیلام گھر میں دنیا کی سب سے پہلے اور تاریخ ‘ایپل ون’ کمپیوٹر کی نیلامی جلد ہی شروع ہوئی تھی جس میں بولی کا آغاز 50 ہزار ڈالر (تقریباً 80 لاکھ پاکستانی شہری) تھے۔

غور کے طور پر ، یہ آن لائن نیلیم بوسٹن کی نیلم گھر ”آر آر ایکشن“ کی ویب سائٹ پر 10 دسمبر سے شروع ہو رہی ہے اور 17 دسمبر کو کوپتام پذیر والے مقام ہے۔ واقعی یہ تاریخ ساز کمپیوٹر بہت مہنگے داموں نیلام ہیں۔

1976 ء میں بنائے گئے اس کمپیوٹر کی خاص بات یہ تھی کہ ”ایپل کارپوریشن“ کی بنیوں ، اسٹو جابز اور اسٹو ووزنیاک کے پاس تیار کیا گیا تھا جس کی قیمت 500 ڈالر رکھی تھی جو اس زمانے کا حساب کتاب ہے۔ تھی۔

اس ماڈل کا نام ہی نہیں “ایپل کمپیوٹر” تھا جس کی وجہ سے وہ خود کو دیکھ سکتے ہیں ‘بورڈ’ کے علاوہ چھوٹے چھوٹے بلیک اینڈ وائٹ ٹیلی وژن کو کمپیوٹر مانیٹر میں تبدیل کیا گیا تھا۔

دنیا کے سب سے پہلے ایپل کمپیوٹر میں مذکورہ ساز ساز سامان اور سامان کے علاوہ ایک عدد یوزر مینوئل اور چند آڈیو کیسٹ بھی شامل تھے جنات پڑھ رہے ہیں اور سن کر لوگ بھی اس میں شامل ہیں۔

نیلامی میں رکھے ہوئے ہیں “ایپل ون” کمپیوٹر کی ایک خاص بات ہے اور یہ بھی ہے: اس یوزر مینوئل اور کیسٹس پر اسٹیو ووزنیاک کے دستخط بھی موجود ہیں۔

1976 ء میں 200 کمپیوٹر بنائے ہوئے جنوری سے 175 میں ہوسکے تھے۔ وقت کے ساتھ ہی اس میں بیشتر کمپیوٹر ٹوٹ پھوٹ کا خاتمہ اور اس وقت کی پوری دنیا میں صرف 63 “ایپلن“ کمپیوٹرز ہی باقی رہ گئے ہیں جن میں صرف 6 مقامات ہی قابل استعمال ہیں۔

بوسٹن کے نیلام گھر میں ایپل ون کمپیوٹر ، کورے کوہن نامی ایک انجینئر کی ملکیت ہے۔ یہ کمپیوٹر خراب ہوچکا ہوا تھا اور اس کے بعد اس قابل ہو گیا تھا کہ اس کے بعد اس کا استعمال کیا جاسکتا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here