دونوں ممالک میں ویکسیینیشن کے دوران روشنی میں اضافہ ہوا ، خامنہ ای (فوٹو: فائل)

دونوں ممالک میں ویکسیینیشن کے دوران ملاقات میں اضافہ ہوا ، خامنہ ای (فوٹو: فائل)

تہران: ایران کے لیڈر آیت اللہ خامنہ نے امریکہ اور برطانیہ کی دوا ساز کمپنیوں کے تیار کردہ کورونا ویکسین سے انکارکول لیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی روحانی پیشوا خامنہ ای امریکہ اور برطانیہ کی دوا ساز کمپنیوں کے تیار کردہ کورونا ویکسین قابل اعتماد نہیں ہیں اس سے ایران کا فائدہ اٹھانے والا اور آکسفورڈ یونیورسٹی کی ویکسین نہیں ہے۔

ایران کے روحانی پیشوا نے سرکاری ٹیلی وژن کے بارے میں ایک پیغام میں مزید کہا ہے کہ 2 مغربی طاقتوں نے ٹیکس لگانے پر اعتماد نہیں کیا ہے۔ اگر یہ ویکسین کارگر ہوتیں تو وہ خود دے دے گی۔

یہ خبر پڑھیں: ایران میں مقامی سطح پر تیار کورونا ویکسین کی ٹرائل کا آغاز

ایرانیوں کے لیڈر خامنہ ای نے یہ بھی کہا کہ دنیا بھر میں اموات کی سب سے زیادہ شرح بھی ہے لیکن یہ بھی دنیا کے دو ممالک میں شامل ہے۔

ایران کے روحانی پیشوا خامنہہ کو یاد ہے کہ 1990 میں فرانس سے لوگوں نے خون کی بوتلیں لگائیں ، ایرانی شہریوں نے بعد میں ایڈز کی تشخیص کی اور اسے آج تک مداوا نہیں کیا۔

ایران کی ریڈ کریسنٹ سوسائٹی نے ملک سے متعلق لیڈر کے بارے میں بیانات کے بعد امریکی دوا ساز کمپنی کا فائدہ اٹھایا کورونا ویکسین کے ایک لاکھ 50 ہزار افراد درآمدی منصوبے پر عملدرآمد روک دیا گیا۔

خیال ہے کہ ایران کی ریڈ کریسنٹ سوسائٹی نے اس سے قبل چین سے بھی کورونا ویکسین کو 10 لاکھ خوراکیں خریدنے کے لئے اضافی منصوبوں کا اعلان کیا تھا ، اس کے علاوہ ایران کی مقامی سطح پر بھی کورونا ویکسین کی تیاری کا دعویٰ ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here