تصویر میں نمایاں پیسیفک ٹری فراگ اور دیگر اقسام پیمانک پانی میں کمی اور درجہ حرارت میں اضافے سے اچھلنے کی چیزیں کھسک جاتی ہیں۔  فوٹو: نیوسائنٹسٹ

تصویر میں نمایاں پیسیفک ٹری فراگ اور دیگر اقسام پیمانک پانی میں کمی اور درجہ حرارت میں اضافے سے اچھلنے کی چیزیں کھسک جاتی ہیں۔ فوٹو: نیوسائنٹسٹ

کینیڈا: بعض اقسام کے مینڈکروں میں اگر پانی کی طرح واقعات پیش آتے ہیں تو ان میں چھلانگ لگانی بھی رہ جاتی ہے۔ مینڈسک میں اچھلنے کی خاصیت سے دشمنوں سے بچاتی ہاور رکاوٹیں عبور کو بھی مدد دیتی ہے۔ لیکن ماہرین کی یہ بات ثابت نہیں ہوسکتی ہے کہ عالمی سطح پر پانی کی کمی واقع ہوسکتی ہے۔

کینیڈا میں سائمن فریزر یونیورسٹی کے ڈین گرینبرگ اور ان کے ساتھیوں نے تین اقسام کے مینڈکر پر تجربہ کیا۔ ان کوسٹل ٹیل فراگ پہلوانوں نے پانی کے چشموں میں رہائش پذیر۔ دوسری قسم کی خشک جگہوں پر لوگوں کے گریڈ ڈسٹریٹ فراگ کی اور تیسری قسم پیسفک ٹری فراگ ہے جو کہ ماحول میں ڈھل کر رہ گئی ہے۔

سب سے پہلے تینوں اقسام کے مینڈسک کی چھلانگ لگانے کا سارا مواد نوٹ کیا ہوا تھا۔ اس کے سب سے زیادہ ماحول میں ایک دو تین اقوام کی مینڈکسی جسمانی درجہ حرارت اور اس میں پانی کی مقدار کو کم یا طویل عرصے سے گزرنا ہے۔

اس تحقیق سے معلوم ہوا کہ جسمانی پانی میں کمی واقع ہوئی ہے ، اور بس اتنا ہی فاصلہ ہوتا ہے جس سے کم فاصلہ ہوتا ہے۔ جب مینڈسک کے جسمانی پانی میں 30 فیصد تک کمی ہوتی ہے تو 45 فیصد مینڈک اچھلنا ہوتے ہیں۔

مطالعہ کے تحت پانی کی کمی کے ساتھ ساتھ ماحول کی درجہ حرارت حرارت بھی 15 سے 30 درجے کی سینٹی گریڈ تک بڑھایا ہو تو اس کی چھلینگ کا فاصلہ کم سے کم دورے پر ہوتا ہے۔ اس کے بعد کسی ہی مینڈسر کو پانی میں لایا اور اس کے جسم میں پانی معمول پر آگیا تو اس میں اچھلنے بھی نہیں آتے۔

ماہرین کا خیال ہے کہ پانی کی کمی سے مینڈکروں کی خلیات میں آئنوں کا تبادلہ ہوتا ہے۔ اسی طرح غذائی اجزا بھی رککٹ ہیں۔ اس کی وجہ سے مینڈکروں کے پٹہ میں کمزور پڑھائی ہوتی ہے اور وہ اچھلنے کے قابل نہیں رہتے ہیں۔ پانی کی کمی دل میں خون پمپ کرنے کی وجہ سے بھی متاثر ہو رہی ہے اور خون خرابہ ہوتا ہے۔

شاید ممالیوں ، حشرات اور دیگر رینگنے والے جانوروں پر بھی درجہ حرارت اور پانی میں کمی بیشی کے عیسیٰ رہائش پذیر رہتے ہیں لیکن اس کی تحقیق میں اشارے کی ضرورت ہے۔

اس تحقیق کے عبد سائنسدانوں نے اس کو تبدیل نہیں کیا ، عالمی تپش اور پانی کی کمی واقع ہوئی ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here