افغانستان میں 2001 میں نیوزی لینڈ کے 3 ہزار 500 فوجی تعینات تھے۔  فوٹو: فائل

افغانستان میں 2001 میں نیوزی لینڈ کے 3 ہزار 500 فوجی تعینات تھے۔ فوٹو: فائل

ویلنگٹن: نیوزی لینڈ میں افغانستان سے رواں برس مئی میں تمام فوجی اہلکار واپس آئے تھے۔

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم نے جسینڈا آرڈرن کے بارے میں اعلان کیا ہے کہ 20 سال تک نیٹو اتحادی ممالک کی طرف سے افغانستان میں خدمات انجام دینے کے بعد باقی رہ جانے والے فوجی کارکنوں کو مئی میں وطن واپس بلاک کرنا پڑا۔

شورش زدہ ملک میں داخلی امن پائیدار سیاسی حل ممکن ہے اور اب افغانستان کے اندرونی طاقتوں کے درمیان پائے جانے والے اقدامات ناکام ہوگئے ہیں لیکن اب وہ نیوزی لینڈ کی فوج کی مزید ضرورت نہیں ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: امریکہ کا افغانستان سے 4 ہزار فوجی اہلکار واپس آئے

اس سے پہلے میڈیا سے گفتگو میں نیٹو کے بارے میں یہ کہنا تھا کہ نیٹو ممالک کے وزرائے خارجہ کا اجلاس بدھ کے روز ہی ہوا تھا اور اس سے پہلے نیوزی لینڈ کے وزیرِاعظم نے ان سے بات نہیں کی تھی۔ ان کے فوجیوں نے انخلا کا اعلان کیا۔

یہ خبر پڑھیں: امریکہ میں 10 فوجی اڈے بند کروئے

2001 میں نیوزی لینڈ کے 3 ہزار 500 فوجی اہلکار افغانستان خدمات انجام دے رہے ہیں اور اس کے دوران 10 اہل کار ہمیشہ ہمیشہ ہی نیوزی لینڈ میں موجود فوجیوں کی تعداد میں نمایاں کمی محسوس کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ امریکہ اور طالبان کے درمیان بارش کے وقت معاہدے کے تحت غیر ملکی افواج کوئی مئی 2021 میں افغانستان واپس اپنے ملک چلے گئے تھے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here