فیس بک پر نامناسب تصویروں کی نشاندہی کرنے والے خودکار سافٹ ویئر کو پیاز کو 'جنسی مواد' سمجھتے ہیں۔  (فوٹو: انٹرنیٹ)

فیس بک پر نامناسب تصویروں کی نشاندہی کرنے والے خودکار سافٹ ویئر کو پیاز کو ‘جنسی مواد’ سمجھتے ہیں۔ (فوٹو: انٹرنیٹ)

سلیکن ولی: خبر گرم ہے کہ فیس بُک نے پیاز کی کچھ تصاویر کو ‘فحش’ اور ” لڑکیوں کے نامناسب ” معاہدے سے متعلق امید ظاہر کی ہے۔

واقعی یہ ہوا ہے کہ کینیڈا کی ایک زرعی صورتحال ہے۔ ” گیز سیڈ کمپنی ” نے فیس بک کو قبول کیا تھا جس میں سبزیوں کی ٹوکری میں پیاز کا ڈھیر پڑا تھا۔

لیکن فیس بُک میں فحش ، برہنہ اور زمانے کی نامعلوم فلمیں نشاندہی کرنے والوں کو خود پروگرام کر رہی ہیں شوچ رنگت والی پیاز کوٹ ” کچھ اور ” وہی سمجھتی ہے ” جنسی مواد ” جس پر وہ نشان زدقع ہیں۔

اس کے بارے میں مطلع کیا گیا تھا کہ وہ پیاز یا زراعت سے متعلق ہیں۔ مصنوعات کی فروخت

اگلے روز فیس بک کی کمپنی کی کمپنی کو مطمعن کیا گیا تھا کہ ‘انتہائی فحاشی’ کی تصویر استعمال ہوسکتی ہے ، وہ ویب سائٹ پر رہتی ہے۔

پیاز کے اخبار میں کیا فحاشی تھی؟ اس بات پر فیس بک انتظامیہ اور گیز کمپنی میں گفتگو جاری ہے۔ البتہ مصنوعی ذہانت کے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ خود مضامین خیز واقعہ ہے جو ابھی خودکار کمپیوٹر پروگرام ہے ‘ذہین’ نہیں ہے ہر کام اور ہر معاملے میں اس پر بھروسہ کیا ہوتا ہے۔

یہ خبر مزاحیہ ضرور ہے انسان کی بنائی جدید ترین ٹیکنالوجی یعنی مصنوعی ذہانت کی خاموں کو ظاہر ہوتی ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here