واٹس ایپ کو ڈیٹا شیئرنگ کی پالیسی کو وقتی طور پر موقوفستہ پر ہے۔  فوٹو: فائل

واٹس ایپ کو ڈیٹا شیئرنگ کی پالیسی کو وقتی طور پر موقوف ساحل پر ہے۔ فوٹو: فائل

مینلوپارک: واٹس ایپ پوری دنیا کی تشخیص اور عوامی پریشانیوں کے بعد فیس بک سے ڈیٹا شیئرنگ کے موقع پر وقت کے ساتھ ہی مؤخر واقع ہیں۔

واٹس ایپ نے جمعہ کے روز اپنے متاثرین پرائیویسی پالیسی سے متعلق ایک اہم بیان جاری کیا ہے جس میں تین ماہ تک مؤخر ہونے کا اعلان کیا ہے۔ اس سے پہلے اسمارٹ فون پر آڈیو اور ویڈیو رابطے کی بات تھی اس نے 8 فروری کے بعد اپنی پالیسی تبدیل کی تھی جس سے لوگوں کا بہت سا ڈیٹا فیس بک بک رہا تھا۔

اس اعلان کے بعد دنیا بھر میں واٹس ایپ نے دو ارب کی لگ بھگ خواتین پرائیویسی پالیسی پر تبادلہ خیال کیا اور دوسرے لوگوں نے بڑی تعداد میں اس کی پالیسی کی دستاویزات کو مستحکم کردیا۔ ان ایپس میں سگنل اور ٹیلی گرام سرِ فہرست ہیں جو ایپل اور ایپ اسٹور پر سر فہرست فہرست ہیں۔ یہاں تک کہ کچھ ممالک میں آپ کے ایپس کوٹ ڈاؤن لوڈ والی فہرست میں شامل ہوسکتے ہیں۔

کچھ دن پہلے واٹس ایپ نے بتایا تھا کہ اگلے ماہ کے پہلے ہفتے میں واٹس ایپ کے لوگ تھے جن کا ڈیٹا فیس بک پر شیئر تھا جس کے بعد لوگوں کو تذبذب کا شکار کرنا پڑا۔ دوسری دنیا میں لوگوں کی بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور دنیا بھر میں لوگوں کی تیزی سے واٹس ایپ ایپ چھوڑ دیتے ہیں اور دیگر پلیٹ فارم کی طرح متوجہ ہوتے ہیں۔

واٹس ایپ نے اس سے متعلقہ ٹویٹ میں کہا ہم سے رابطہ کرنے والے ہر فرد کا شکریہ۔ ہم واٹس ایپ صارفین سے براہ راست رابطہ کرتے ہیں ‘غلط فہمی’ کا ازالہ کریں گے۔ 8 فروری کو کسی کا بھی اکاؤنٹ ختم یا معطل نہیں ہو گا۔ مئی میں ہم اپنے کاروباری منصوبے کو دوبارہ پیش کریں گے۔

ایک ہی ٹویٹ میں کہا گیا تھا کہ ہم کوشی شرائط جانتے ہیں اور جائزہ لینے کے لئے مناسب وقت نہیں ہوتا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ ہم کسی بھی اکاؤنٹ میں ڈیلیٹ نہیں کریں گے۔

تجزیہ کاروں کے مطابق واٹس ایپ کے لوگوں نے بڑی تعداد میں دوسرے ایپس منتقل کردیئے ہیں اور دباؤ کے تحت واٹس ایپ نے اسے مشکل سے بچایا ہے۔ واضح رہے کہ برطانیہ اور یورپی ممالک کی نئی پروائیویسی پالیسی میں شامل نہیں ہوں گے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here