صدر نمل نالج یونیورسٹی میں بطور سفیر کا وقت مقررہ پر تھا ، علی ظفر فوٹوٹوئٹر

صدر نمل نالج یونیورسٹی میں بطور سفیر کا وقت مقررہ پر تھا ، علی ظفر فوٹوٹوئٹر

کراچی: گلوکارعلی ظفر کے نمل نالج یونیورسٹی میں بٹور سفیر پر میڈیا میڈیا کی فہرست سے ملا جلا طریقہ کار منظر عام پر آرہا ہے۔

گلوکار و اداکار علی ظفر نے کہا کہ اس نے منگل کو نمل نالج یونیورسٹی میں بٹور سفیر مقرر کیا تھا اور اس نے فخر کو حاصل کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: گلوکارعلی ظفرکووزی براعظم کی سب سے بڑی اعزاز

ابتدائی ذرائع ابلاغ کے ذرائع ابلاغ کے ذرائع سے علی ظفر کے بطور سفیر بنائے پر ملا جلا ردعمل سامنے آرہا ہے۔ کچھ لوگ اس فیصلے سے خوش ہیں کچھ ناخوش۔ اور اسی وجہ سے علی ظفر اور میشا شفیع کے درمیان ہراسانی معاملات تنازع ہیں۔

ایک صارف کی لکھا علی ظفر کو نمل نالج سٹی کا سفیر سیٹ کیا معلوم ہے۔ علی ظفر جنوری کے دور میں مقبولیت میں کمی ہوئی تھی اور عوامی سطح پر پزیرائی مل رہی تھی اور اس کی وجہ یہ تھی کہ اس کی وجہ سے اس کی وجہ سے اس کا تعاقب کیا جاسکتا ہے۔

اسلامی جمہوریہ پاکستان میں کسی صارف کو خوش آمدید کہا جاسکتا ہے جب وہ ہراساں کرنے والے علی ظفر جنوری کے کسی خاص تعلیمی قابلیت کے حامل نہیں تھے۔ وہ بھی یونیورسٹی کا ہے جس کے بانی مہمان پاکستان ہیں۔

دوسری طرف علی ظفر کے مداحوں نے ان کے دفاع میں میٹنگوں کو کچل دیا۔ اسامہ نامی صارف علی علی ظفر کو ملنے والے عیدے پر مبارکباد دی اور لکھا ہے کہ وہ اس کے مستحق ہیں۔ کسی صارف کو ذاتی طور پر علی ظفر اور کسی میشا شفیع سے کوئی شخص نہیں چھپا رہا ہے ، لیکن کسی شخص کو صرف سزائے موت دینے کی وجہ سے سزا نہیں دی جارہی ہے۔

علی نامی شخص نے لکھا علی ظفر بے گناہ ثابت ہو رہا ہے اور اس کی وجہ سے لوگوں کو سزا نہیں دی جارہی ہے اور اس کا اعتراف جرم نہیں کرنا پڑتا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here