جدید ترین 'بکتر بند' روسی لباس میدان جنگ میں سپی شاپ کوٹ 'سپر ہیومن' دیا گیا تھا۔  (فوٹو: روسٹیک)

جدید ترین ‘بکتر بند’ روسی لباس میدانِ جنگ میں سپی شاپ کوٹ ‘سپر ہیومن’ دیا گیا تھا۔ (فوٹو: روسٹیک)

ماسکو: روس کے سرکاری دفاع ” روسٹیک ” نے کہا اعلان کیا ہے وہ دنیا کا جدید ترین فوجی لباس تیار کر رہا ہے جو طاقتور مشین گن سے باہر ہے۔

واضح ہے کہ 0.50 کیلیبر مشین گن (فوٹو ‘ففٹی کیلبر مشین گن’ بھی ہے) دنیا کی طاقتور مشین گنوں میں شمار ہوتا ہے۔ ” روسٹیک ” کی پریس ریلیز میں اسی مشین گن کا حوالہ دیا گیا۔

یہ لباس ، واقعی صحیح معنوں میں ‘فوجی زرہ بکتر’ میں کسی طرح کی بات نہیں ہے ، روس میں ‘سوتنک’ (سوتنک) کے عنوان سے تیار شدہ فوجیوں کے لباس کی ” چوتھی نسل ” جس طرح سے آئی تھی ” تیسری۔ نسلوں کی کیسی خوبیاں اور بہتر بنائی جائیں۔

” سوتنک کومبیٹ آرمر ” کی تیسری نسل جدید ترین فوجی آلات کے علاوہ نائٹ ریسرین (اندھیرے میں واقعہ کا نظام) ، واٹر فلٹر اور اندرونی مواصلاتی نظام سے اس لباس کا تناسب 7.62 ملی میٹر کیلیبر والی رائفل کی گولیاں منصوبہ بندی کا منصوبہ ہے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ ‘سوتنک’ کی اگلی (چوتھی) نسل کے لباس میں ملازم بلٹ پروف خاص طور پر بہتر بنائی جائیں۔ یعنی چھوٹی موٹی پستول اور رائفل کے علاوہ طاقتور مشین گن سے فائر فائر والی گولیاں تک کچھ نہیں ہوسکتی تھیں۔

امریکی ویب سائٹ ” ٹاسک اینڈ پرپز ” سے ایک ہے حالیہ پوسٹ میں روس کے مذاق والے فوجی لباس کو پیدا کرنے والے دستوں (انفینٹری) کے بارے میں ” مستقبل سے ہم آہنگ ” اور متاثر کن ایجاد بھی ٹھیک ہوگئے۔

روسٹیک کے مطابق ” سوتنک ” کی اگلی نسل 2035 تک روسی فوج کے سپرد کردے گی۔ اگر سوتنک کی نسل (تیسری) نسلوں کا لباس جمعہ کو روس میں باقاعدہ طور پر ہوتا ہے تو وہ روسی فوجیوں کے بارے میں معلوم نہیں ہوتا تھا۔

دوسری ایک اور امریکی ویب سائٹ ” فیوچر اِزم ” جدید ترین ” سوتنک ” کو ایک بار فوجی لباس کا معاہدہ کیا گیا ہے۔ سپاہی کھانا کودِ جنگ ” فوق انسان ” (سپر ہیومن) مالوں سے مالا مال کردے۔

اس بات کا مطلب یہ ہے کہ حالیہ چند برسوں کے دوران امریکی عوام ابلاغ بہت کچھ چین اور روس میں واقع عسکری تحقیق اور ترقی (ملٹری ریسرچ اینڈ ڈیویلپمنٹ) کے بارے میں کچھ زیادہ ہی خبریں شائع کر رہے ہیں۔ افواہ تک حقیقت سے دوچار نہیں ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیں: اس ہتھیار کے سامنے ہائیڈروجن بم بھی معمولی پٹاخے جیسا ہے ، امریکی انجینئر کا دعویٰ

قریب قریب مغربی علاقوں میں ابلاغ میں اختیار حاصل ہوا تھا۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here