پینسلوانیا یونیورسٹٰی کے ماہرین نے اصل مریضوں کے ڈیٹا پر ایک ایپ بنائی کا ذکر کیا ہے جس کی وجہ سے وہ سنجیدہ ہے جو واقعی سن کران اور چیلین کو دیکھ رہا ہے ۔79 فیصد درست تھا۔  فوٹو: پینسلوانیا یونیورسٹی

پینسلوانیا یونیورسٹٰی کے ماہرین نے اصل مریضوں کے ڈیٹا پر ایک ایپ بنائی کا ذکر کیا ہے جس کی وجہ سے وہ سنجیدہ ہے جو سینٹر میں واقع ہے اور چھٹی کو دیکھ رہا ہے ۔79 فیصد درست تھا۔ فوٹو: پینسلوانیا یونیورسٹی

پینسلوانیا: اکثر اوقات لوگ فالج کے خطرات سے ناواقف رہتے ہیں اور جب وہ رہتے ہیں تو اس وقت تک بہت دیر رہ جاتی ہے۔ اسی تناظر میں امریکی ماہر نے مشین لرننگ ایپ بنائی کو متاثر کرنے والی شخص کی آواز اور ویڈیو سے اس کیفیت کا انداز لاگاسکٹی بنا ہوا ہے۔

پہنچنے کے بعد نیورولوجسٹ (دماغی معالج) کا معالجہ ضروری ہوتا ہے جو فالج کیفیٹی اور شدت پسندی کے انداز میں ہوتا ہے۔ یہ ایپ پینسلوانیا اسٹیٹ یونیورسٹی اور ہیوسٹن میتھوڈسٹ کے رہائشیوں کا مشترکہ طور پر تیار ہے۔ اس کی تیاری سے پہلے 80 کے قریب فالج کے مریضوں کی آواز اور ویڈیو ریکارڈ موجود تھا اور اس میں ڈیٹا بیس شامل تھے۔ فالج کے مریضوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور وہ عادل ہوتے ہیں اور وہ نارمل نہیں رہتے ہیں۔

اس کے بعد کا ڈیٹا کو مشین لرننگ سے گزارہ الگ الگھم کو تربیت دی جا رہی ہے۔ جب وہ فالج کے مریضوں پر آزمائش کرتے ہیں تو وہ 79 فیصد درستگی سے فالج کم یا زیادہ شدت پسندانہ پیشگوئی کی تصدیق ہوتی ہے جس کی تصدیق مختلف ہوتی ہے۔ ایپ سے متعلق دعویٰ کیا ہوا ہے کہ اس ایمرجنسی روم کی تشخیص کی طرح ہی کام کرنا ہے۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ اس میں صرف چار منٹ میں فالج نہیں ہے اور نہ ہی اس کی نشاندہی ہوتی ہے۔

اس تحقیق میں والی ماہر پروفیسر شیرون ہوانگ کا یہ اولین کام ہے جس میں ایمرجنسی میں فالج کا انداز لاگاسکتا ہے۔ چشمہ کا ڈیٹا اور آواز اس میں بہت مددگار ہے اور اس طرح گھر بیٹھے مریض دور دراز سے رہتے ہیں اور وہ بھی کسی کیفیت کا جائزہ لیتے ہیں۔ اس کی طبیعت کو اہمیت ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here