ہانگ کی تاریخ میں نوادرات کی سب سے بڑی چوری میں تین ملزمان کی غلطی ہوئی ہے۔  فوٹو: سی این

ہانگ کی تاریخ میں نوادرات کی سب سے بڑی چوری میں تین ملزمان کی غلطی ہوئی ہے۔ فوٹو: سی این

ہانگ ہانگ سٹی: ہانگ کانگ کی تاریخ میں نوادرات اور مصوری سب سے بڑی چوری میں تینوں ملزم کو غلط الزامات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس 64 ارب ڈالر کی مالیت نایاب فن پارے ، ڈاک ٹکٹ اور دیگر نوادرات چرائے ہیں۔

اس فن پاروں میں نو فٹ لمبا ایک ٹکڑا بھی شامل ہے جو چین کے سابقہ ​​اور ممتاز لیڈر ماؤ زے تنگ کی خطاطی کا نمونہ ہے۔ لیکن چوروں نے اس کے دو ٹکڑے بھی کرائے ہیں۔

اس کے علاوہ ماؤ زے تنگی کے ہاتھوں سے بنائے جانے والے خطاطی کے 6 چھوٹے نمونوں ، 10 عدد قدیم علاقوں اور 24 ہزار سے زیادہ ڈاک کے نایاب ٹکٹ بھی شامل ہیں۔

یہ نوادرات کسی شخص کی ذاتی خزانہ سے محروم ہے اور اس کی مالیت ایک پریشانی میں ہے لیکن بنٹی ہاتہم ہانگ کانگ کرنسی میں یہ رقم پانچ ارب ڈالر ہے۔ یہ سارے نوادرات 10 ستمبر کو اپارٹمنٹ سے چرائے ہوئے ہیں۔ ابتدائی تفتیش کے مطابق تین افراد نے یہ کارروائی کی تھی اور شاید وہ بھی ملزمان ہی تھے۔

اس قبضے سے خطاطی کا ایک نمونہ اور دو حصوں کا حص ۔ہ ہے۔ تاہم پولیس نے پہلے کسی شخص سے کوئی غلطی نہیں کی۔ ان سب سے تفتیش کی روایت ہے۔ پولیس کے مطابق یہ واقعہ براہ راست راست ملزمان اب غائب بھی ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here