تصویر میں سات اسکرین والا دنیا کا پہلا لیپ ٹاپ نمایاں ہے جو لندن کی کمپنی بنا رہا ہے اور اس پروگرامنگ ، ماڈلنگ ، ڈیزائننگ ، اسٹاک ایکسچینج ، سائرسیکیورٹی سیکیورٹی اور دیگر امور کے استعمال کا طریقہ کار ہے۔  فوٹو: ایکسپین اسکیپ

تصویر میں سات اسکرین والا دنیا کا پہلا لیپ ٹاپ نمایاں ہے جو لندن کی کمپنی بنا رہا ہے اور اس پروگرامنگ ، ماڈلنگ ، ڈیزائننگ ، اسٹاک ایکسچینج ، سائرسیکیورٹی سیکیورٹی اور دیگر امور کے استعمال کا طریقہ کار ہے۔ فوٹو: ایکسپین اسکیپ

لندن: دنیاوی کمپنی دنیا میں ایک انوکھا لیپ ٹاپ تیار کر رہی ہے جس میں ایک دو بھی نہیں ، ساتھیوں کی تعداد میں ڈسپلے اسکرین جو انتہائی سنجیدہ کاموں کا استعمال کرتے ہیں۔

اس کمپیوٹر کو ایکسپین اسکیپ آرورا سیون کا نام لیا گیا ہے ایکسپین اسکیپ نامی کمپنی نے اسے تیار کیا ہے۔ اس سائبرسیکیورٹی سیکیورٹی ، سیکیورٹی کیمروں کی فوٹیج ، آئی ٹی ماہرین ، ڈیزائنر ، اسٹاک ایکسچینج اور آن لائن ٹریڈنگ ماہرین کی بات بٹور خاص تیار ہوئی ہے۔

اگرچہ عموماً ورک اسٹیشن پر ایک یا دو ڈسپلے کافی عام ہیں لیکن عام افراد میں سے ایک بڑی اسکرین ہے جو پریشان ہوسکتی ہے۔ یہ دنیا کا پہلا لیپ ٹاپ ہے جس کی مختلف جگہوں پر ساتھی ڈسپلے لگائے جاتے ہیں۔ اس طرح اسکین اسکیپ آرورا سیون دنیا کا پہلا ساتھی ڈسپلے والا ورک اسٹیشن بھی ہے۔

لیکن اس کی تصویر میں دیکھنا کوئی لیپ ٹاپ حتمی ڈیزائن نہیں ہے لیکن یہ کسی کا کوئی آرڈر بھی تیار نہیں ہے جو نمونہ کی حامل پروٹوٹائپ کا نام رکھتا ہے۔ پروٹوٹائپ کی خبریں وائرل ہو رہی ہیں۔ لیکن اس ضمن میں پہلے کمپنی کو ایک خط خطی معاہدے پر دستخط کرنا چاہتے ہیں آپ کے سات اسکرین والا لیپ ٹاپ خریدنا ہوگا۔ اس کے بعد خاص رقم بطور ایڈوانس دے رہی ہے۔ لیکن ایکسپین اسکیپ کی اس کی قیمت سے زیادہ قیمت نہیں ہے۔

اس میں 17.3 انچ کے چار بڑے مانیٹر ہیں جن سے دو لینڈ اسکیپ اور دو پورٹریٹ اسٹائل ہیں۔ سب کو فورکے اسکرین ریسولوشن حامل ہیں۔ ساتھی ساتھی انچ کے تین ڈسپلے اور لگائے جاتے ہیں۔ اس کا مضبوط ڈھانچہ تمام ڈسپلے کو سنبھالتا ہے اور اس میں لیپ ٹاپ کا ٹرانسفرفارم ہوتا ہے۔

کمپنی کے مطابق اس انٹیل کو آئی آئی 9900 کے پروسیسر ، 64 جی بی ڈی ڈی آر فور 2666 میموری اور ہارڈ ڈسک کی گنجائش دو ٹیرابائٹ ہیں۔ لیکن اس کی سمجھ نہیں آرہی ہے مہنگا نسخہ گیمنگ کی باتیں سنجیدہ کام کی جاسکتی ہیں جس کی تفصیل بیان کرنے والی ہے۔ اس میں کمپیوٹر اور ڈسپلے الگ الگ بیٹریاں لگ رہی ہیں جو دو گھنٹے تک چلتی رہتی ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here