یہ صابن پہلی بار 2013 میں قطری عورت و اوّل کیلیے بطور تحفہ تیار کیا ہوا تھا۔  (فوٹو: میڈیا میڈیا)

یہ صابن پہلی بار 2013 میں قطری عورت و اوّل کےلی بطور تحفہ تیار ہوا تھا۔ (فوٹو: میڈیا میڈیا)

تریپولی: لبنان کے شہر تریپولی میں ایک چھوٹی سی کمپنی بنانے والی ایک صابن اتنا مہنگا یہ ہے کہ اس کی 100 گرام والی والی ٹکیہ 2،800 ڈالر ہے جس میں پاکستانی اکاؤنٹ 4 لاکھ 50 ہزار ڈالر ہے۔ اس صابن کی تیاری میں سونے کے باریک ذریاتات کے علاوہ ‘ہیری کا سفوف’ بھی استعمال کرتا ہے۔

خبروں کے مطابق تریپولی ، لبنان میں روایتی انداز میں صابن والی ایک چھوٹی سی کمپنی پچھلے 500 سال سے بہت مہنگے صابن کے علاوہ جلد کی حفاظت کرنے والی والی کمپنی کی تلاش میں واقع ہوئی ہے۔ یہ کمپنی ایک کنبہ کی ملکیت ہے اور اس کا نام نہیں ” بدر حسن اینڈ سنز ” ہے۔

اس کی مصنوعات ہر جگہ دستیاب نہیں ہیں بلکہ صرف دبئی اور متحدہ عرب امارات کی کچھ دکانوں پر فروخت ہوتی ہیں ، جہاں ہر چیز کی حد سے زیادہ مہنگی اور انتہائی مالدار طبقے موجود ہیں۔

موجودہ ہیرو میں میڈیا پر ایک ویڈیو میں اس کی کمپنی کی معمول کے مطابق عام حسن حسن ایک صابن کی چھوٹی سی سی ٹکیہ جائزہ لے رہے ہیں جس کی قیمت بتارہے ہیں جن کی تعداد 2،800 ڈالر ہے۔

قبل ازیں 2015 میں بھی بی بی سی خبروں کے بارے میں اس صابن کے بارے میں ایک مختصر رپورٹ چل رہا ہے۔

https://www.youtube.com/watch؟v=-_4ITeAmk18

اس کی تیاری میں زیتون کا خالص تیل ، اصلی شہد ، عود اور کھجور کے علاوہ سونے کے باریک ذریات اور اصلی ہیرو کا سفوف بھی شامل تھا جس کی قیمت بھی آسمان پر پہنچ گئی تھی۔

یہ تو معلوم ہی نہیں ہے کہ صابن کی دکانوں پر بھی کوئی فائدہ نہیں ہوتا ہے ، لیکن یہ بھی معلوم ہوتا ہے کہ یہ صرف ایک مخصوص گاہک ہے جس کو دیکھنے کی ضرورت ہے۔

صابن کی ہر ٹکیہ میں اصلی ہیروؤں کے چند گرام سفوف کے علاوہ 24 قیراط سونے کے 17 گرام جٹن باریک ذرات بھی شامل ہیں۔ جب یہ ٹکیہ تیار سرگرمی ہے تو یہ ایک خوبصورت اور جاذبِ نظر بند ہوجائے گا ، اس کے بعد اس نے خریدار کا نام دیدہ زیب خطاطی سے منسوب کردیا۔

اس صابن کا نام ” خان الصابون ” (صابنوں کا سردار) یہ پہلی بار 2013 میں قطری عورتِ اوّل کے ل منفرد منفرد ترین تحفے کے طور پر تیار ہوا تھا۔ تب لے کر آج تک دنیا کی مہنگے ترین صابن کا اعزاز بھی اسی طرح کا پاس ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here