میرے نام پر دلیپ کمار والے پشاور میں آبائی گھر کا مناسب اور قانونی اختیار نام (بجلی گھر اٹارنی) ہے۔  بھٹیجے کا دعویٰ فوٹو فائل

میرے نام پر دلیپ کمار والے پشاور میں آبائی گھر کا مناسب اور قانونی اختیار نام (بجلی گھر اٹارنی) ہے۔ بھٹیجے کا دعویٰ فوٹو فائل

نئی دہلی: بالی ووڈ کے لیجنڈ اداکار دلیپ کمار کے پاکستان میں موجود بھٹیجے فواد اسحاق کا کہنا ہے کہ دلیپ کمار پشاور میں موجود آبائی گھر پشاور کے لوگوں کو تحریری طور پر ان کا معاوضہ دینا پڑتا ہے۔

انڈسٹریلسٹ اور بارڈر چیمبر آف کامرس سابقہ ​​فواد اسحاق نے پریس ٹرسٹ آف انڈیا سے بات کی تھی کہ دعویٰ کیا ہے اس کا نام پر دلیپ کمار کا واقعہ موجود ہے جس میں واقع آبائی گھر مناسب اور قانونی اختیار نامہ (پی آف آف اٹارنی) ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دلیپ کمار نے 2012 میں جائیداد کے آف آف اٹارنی کا مناسب مسودہ تیار کیا تھا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ انکے چچا دلیپ کمار کے دلوں میں پشاور کے لوگوں کا بہت احترام ہے اور اس نے آبائی گھر والے پشاور کے باشندوں کو تحفہ دینا ہے۔ دلیپ کمار کی پشاور اور وہاں موجود لوگوں میں محبت کے کئی دن گزرنے کے بعد بھی ختم نہیں ہوئے۔

دلیپ کمار کے بھٹیجے کا بیان آیا ہے جب خیبرپختونخوا حکومت اور پشاور میں دلیپ کمار کے گھر والے اپنے مالک کو مکان کی قیمت کا معاملہ بنا رہے ہیں ، لیکن کسی بھی طرح کے خفیہ حص تکے میں مکان کو میوزیم تبدیل نہیں ہوسکتے ہیں۔ اٹھایا جاسکے۔

دلیپ کمار کے گھر والے مالکان اورحکومت تنازع میں کیا ہیں؟

خیبر پختونخواہ میں حکومت نے سالانہ دلیپ کمار اور کپور فیملی کے آبائی گھروں کو محفوظ اثاثہ سے متعلق معاہدہ کیا تھا۔ دلیپ کمار کا مکان پشاور کے قصہ خوانی بازار میں محلہ خداداد میں واقعہ پیش آیا ہے اور اس کی کل رقص چار مرلے کی اطلاع ملی ہے۔

اس کا تعمیراتی والا حصہ 1077 مربع فٹ سے کچھ زیادہ ہے۔ اس زمین کی قیمت 72 لاکھ 80 ہزار سے زیادہ طے شدہ ہے جبکہ اس مکان کی ملبے کی قیمت 7 لاکھ 76 ہزار سے زیادہ ہے۔ اس حساب سے دلیپ کمار کے گھر کی قیمت 80 لاکھ 56 ہزار سے زیادہ طے شدہ ہے۔

اس کی قیمت پر گھروں کے مالک مالک کوکشش ہے اور اس نے 80 لاکھ گھروں میں گھر فروخت نہیں کرنا ہے۔ پشاور کے مقامی میڈیا پر حاجی لال محمد کا کہنا ہے کہ اس گھر کی قیمت کم قیمت ہے۔

دوسری طرح کے دلیپ کمار کے ترجمان فیصلی نے پشاور میں دلیپ کمار کے آبائی گھروں سے تعلق رکھنے والے مالکان اور حکومت کے درمیان تنازع کو جلد حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here