خطی رقم کے ساتھ سیلفی پوسٹ کرنے پر کوکین فروش نوجوان غلط۔  فوٹو: میٹرو یوکے نیوز

خطی رقم کے ساتھ سیلفی پوسٹ کرنے پر کوکین فروش نوجوان غلط۔ فوٹو: میٹرو یوکے نیوز

لندن: برطانیہ میں کوکین فروش کو سیلفیوں نے بدعنوانی سے کرواڈیا سمجھا لیکن اس نے قبیلوں کی طرف سے ڈھیرسارے پیسوں کے ساتھ سیلفیاں کھنچوئین اور اس کے مختلف پلیٹ فارم پر پوسٹ پوزیشن حاصل کی۔

18 سالہ ایڈم اور ریلی نے ایک بار میں ہزاروں پاؤنڈوں کے ساتھ تصاویر اور آن لائن پوسٹ پوسٹ کیا۔ ایک تصویر میں وہ نوٹ کریں گے بازو پر پھسلارے ہیں۔ ایک دوسری تصویر میں ان لوگوں کے پاس جو بہت زیادہ رقم ہے۔ اس پر پولیس کوکون ہوا اور نوجوانوں سے بازپرس کرنے کا ارادہ ہے۔

پولیس نے جنوبی ویلز کے علاقے ابرٹریڈر میں کارروائیوں کے دوران ایڈمن فون کو بتایا تھا کہ وہ کوکین اور دیگر منشیات کے ساتھ دکھائی دیئے تھے۔ مزید تفتیش پر 6 ہزار پونڈ کیش ، 3700 پونڈ کی کوکین اور 3000 پونڈ کی کیٹامائن برآمد ہے۔

مزید تفتیش پر ایڈؑم اور ریلیلیوں نے فیس بک کو کوٹ لیا اور اس کو پوسٹ پوسٹ کیا اس نے لوگوں کو منشیات خریدنے کی ترجیب دی۔ ایک اور گفتگو میں اس نے جانتے ہوئے کہا سب سے آخر میں یہ معلوم ہوا کہ اسنیپ چیٹ پر بھی منشیات کی قیمت ہے۔ اس میں اور بی کلاس کی منشیات فروشی اس کا معمول ہے۔

عدالت اس کی رقم اور منشیات قبضہ میں لیتی ہے اور اسے تین سال کی سزا ہوسکتی ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here