ایک ترک اداکارہ جس ملک میں اسپورٹس کے دورے نہیں ہوئے اب وہ کرکٹ کا چہرہ بن گیا ، شرمین عبید چنائے فوٹو فائل

ایک ترک اداکارہ جس ملک میں اسپورٹس کے دورے نہیں ہوئے اب کرکٹ کا چہرہ بن گیا ، شرمین عبید چنائے فوٹو فائل

کراچی: آسکرایوارڈ یا ہفتہ پاکستانی ہدایت کارہ شرمین عبید چنائے سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی اسرا بلگیچ المعروف حلیمہ سلطان پشاور زلمی کی دنیا کے ایمبیسیڈر بننے کی خبروں پر نہیں پڑ رہی ہے اور اس میں پاکستانی فوج کے کارکنوں کو خطرناک قرار دیا گیا ہے۔

چند روز قبل ترک اداکارہ اسرا بلیگ المعروف حلیمہ سلطان نے پشاور کے اسلامیہ کالج کی ایک خوبصورت تصویر کے سوشل میڈیا پر چلنے والی میڈیا ایپلی کیشنز کے شیئر کی تھیی اور ” پھولوں کا شہر ” معاہدہ دیاتھا۔ پشاور زلمی کے بانی جاوید آفریدی نے اسرا بلگیچ کا بیان کیا ہے کہ ریپلیٹ کرغیزا کی خدمت میں واقعی باتیں لکھی گئی ہیں ” پھولوں کا شہر ”۔

جس کے بعد قیاس آرائیاں شروع ہوگئیں ، اسرا بلگیچ رواں سال پاکستان سپر لیگ میں پشاور زلمی کے ورلڈ ایمبیڈر بنوں اور پشاور زلمی کی تحقیقات کریں گے۔ انسٹاگرام پر ایک پوسٹ میں جب اسرا بلگیچ پشاور زلمی کے برانڈ ایمبیسڈر بننے گئے تھے تو پوسٹ پوسٹ پر آسکر ایوارڈ یا ہفتے کی ہدایت کارہ شرمین عبید چنائے اس بات پر خوش نظر نہیں آئیں اور اپنے تحفظات کا اظہار کر رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: ترکش اداکارہ اسرا بلگیچ پشاور میں ہیں؟

اس پوسٹ پر کمنٹ ہے تو شرمین عبید نے لکھا ہے کہ ایک ترک اداکارہ جس ملک میں اسپورٹس ہے اس کا اب کوئی کرکٹ نہیں چل رہا ہے۔ ویسے پاکستانی اداکار گاؤں کے ساتھ کیا ہوا تھا؟ غیر ملکی اداکارہ کی ضرورت پڑھنے والی کیا بات ہے؟

شرمین عبید نے مزید کہا کہ آپ کو بھی اسی طرح کا مظاہرہ کرنا پڑتا ہے کہ فوج کو ملازمتوں کے اڈائیگینوں کو چھوڑنا پڑے گا اور فلمی صنعت میں جو بچ بچے تھے وہ بھی مرجائے گا۔۔ ہم پاکستانی فنکار بھی ہیں

تاہم شرمین عبید چنائے اس کمنٹ کوڈ میڈیا پر زیادہ پسند نہیں کیا گیا۔ ایک میڈیا میڈیا نے اس کے جواب کی یقین دہانی کرائی۔ آپ کو بہت ساری ہدایت کارہ ہیں اور وہ ماشااللہ اور آپ کی پوری دنیا میں پاکستانی شہریوں کی زندگی میں شامل ہیں ، لیکن آپ اس کی حمایت کریں گے لیکن بدقسمتی سے آپ بھی ان سب لوگوں کو دیں گے۔

کیا آپ جانتی ہیں غیر ملکی فنکاروں کو کوکروں سے کام لے کر آرہے ہیں انڈسٹری کی اچھی بات ہے کہ یہ لوگ پاکستانی انڈسٹری کی رہائشی ہیں۔ اس طرح کے غیر ملکی کارکنوں سے کام لینے والے جاسکے ہیں۔

شرمین عبید چنائے کوس صارف کے جواب کو پسند نہیں کرتے اور انھوں نے انڈسٹری سے متعلق کچھ جانکاری نہیں لی ، آپ کو کسی بھی طرح کی جدوجہد کا سامنا کرنا پڑا ، غیر ملکی فنکاروں نے یہاں کام کرنا چاہتے ہیں۔ وہ بہت چھوٹی سی انڈسٹری ہے اور اس وقت تک محفوظ رہنا ہے جب تک کہ یہ ہمارے پیروں کی سرگرمی نہیں ہے۔ براہ کرم اس طرح کی باتیں کرنے سے پہلے تھوڑی ریسرچ چلائیں۔ ہمارے ملک میں بہت کم فلمیں بنٹی ہیں اور ہمارے یہاں پروڈکشن کا بجٹ بھی بہت محدود ہے۔

دوسرے میڈیا کے ذرائع ابلاغ نے شرمندہ عبید چنائے کے تبصرے کے جواب میں کہا تھا کہ اگر اسرا بلگیچ پاکستان میں کرکٹ کی ذمہ داری ہے تو ترکی میں اسپورٹس کو تعارف کروایا گیا ہے اور اس سے نفرت کرنا بند کر دیا گیا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here