چینی کمپنی ای ہینگ 216 نامی ایئر ٹیکسی کی تین مرتبہ آزمائش ہے۔  فوٹو: فائل

چینی کمپنی ای ہینگ 216 نامی ایئر ٹیکسی کی تین مرتبہ آزمائش ہے۔ فوٹو: فائل

جنوبی کوریا: مسافروں کو پرہجوم شہروں میں ایک دوسری جگہ لے جانا ضروری ترین ترین اڑن ٹیکسی ‘ای ہینگ 216’ کی آزمائش کی جانچ کی ہے۔ اس بار فضائی ٹیکسی کو تین مرتبہ اڑیا گیا ہے۔

فضائی سیاحت میں اضافہ اور ایگزیکٹو سروس فراہم کرنے والی والی یہ پوری طرح بجلی سے چلتی ہے اور مکمل طور پر خودکار اور خودمختار بھی ہے۔ ای ہینگ کی آزمائش جنوبی کوریا میں جب خود کار فضائی ٹیکسی لگ رہی تھی تو باقاعدہ حفاظتی سرٹیفکیٹ لیا گیا تھا۔ آزمائشی اڑ ن ٹیکسی میں دو سوار بیٹھ کر سکتے ہیں۔ اس کی جانچ جنوبی کوریا کے گنجان شہر میں ہوئی۔

لیکن تینوں پروازوں کے مخصوص مقامات کی نشاندہی جنو Ø کوریا کی حکومت تھی ، لیکن اگلے تین پانچ برس میں ای ہینگ ٹیکسی سروس شروع ہوئی۔ پہلی فلائنگ سیئول کے مین ہٹن سے شروع ہوئی اور اہم تجارتی کاروبار سے متعلق کاروباری علاقوں تک پہنچے۔

دوسری بار ہنگامی حالت میں اس کی کارکردگی نوٹ کی گئی جس سے ڈیگو شہر کا انتخاب ہوا۔ اس فلائیٹ میں طبقہ اور آگ بجھانا کے آلات پہنچتے ہیں اور اس کا تجربہ بھی بہت کم ہوتا ہے۔ تیسری پرواز میں ای ہینگ 216 کے ساتھ ساحلی علاقوں اور شہر کیدیگر مقامات تک اڑان بھری چلے گئے تفریحی فلائٹ سے متعلقہ دستاویزات ہیں۔

https://www.youtube.com/watch؟v=0_Qr8ct4QAY

اس میں پنکھڑیوں کی تعداد 16 ہے جو آٹھ سال کی شکل میں مرتب کی گئ ہیں۔ یہ پروپیلر کیبن کو چاروں طرف سے گھیرلیٹ ​​ہیں۔ یہ زیادہ رفتار سے زیادہ ہے 130 کلومیٹر فی گھنٹہ اور ایک مرتبہ چارج پر 100 کلومیٹر کا فاصلہ طیبہ کا ہونا۔

جنوبی کوریا کی ایوی ایشن انتظامیہ نے کہا کہ مستقبل میں وہ ای ہینگ کی ہوائی روٹ متعین ہوگی۔

لیکن واضح ہے کہ اس وقت امریکہ اور یورپ میں بھی کئی کئی کمپنیاں فضائی ٹیکسی پر کام کرنے والے ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here