زحل کی چاند اینسیلاڈس پر ڈاکٹر نوریز خواجہ (بائیں) کی تحقیق کو سیّد منیب علی (دائیں) انہوں نے اینی میشن کا برو دیا۔  (فوٹو: فائل)

زحل کی چاند اینسیلاڈس پر ڈاکٹر نوریز خواجہ (بائیں) کی تحقیق کو سیّد منیب علی (دائیں) انہوں نے اینی میشن کا برو دیا۔ (فوٹو: فائل)

لاہور: پاکستانی نوجوان سیّد منیب علی نے جرمنی کی ‘فلائی یونیورسٹی’ میں پلینٹری سائنس کے ماہر ، ڈاکٹر نوزیر خواجہ کے تعاون اور اشتراک سے ایک تھری ڈی اینی میشن تیار کیا ہے ، جس میں سیارہ زحل کی چاند اینسیلاڈس کی زندگی کی صورتحال بہت اہم ہے۔ کیمیائی تعاملات (کیمیکل ری ایکشنز) مختصراً پیش لڑکے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان میں بہت ساری اینی میشن ہاؤسز موجود ہیں لیکن یہ سنجیدہ نوعیت کی ہے۔

” ایکسپریس نیوز ” گفتگو کرتے ہوئے سیّد منیب علی نے بتایا کہ اس سے متعلق تمام معلومات کے بارے میں سائنسی معلومات ڈاکٹر نوزیر خواجہ نے فراہم کی عمر کے بارے میں بتایا گیا تھا ” تھری ڈی اینی میشن ” کو لے کر مشورہ کیا گیا تھا۔ ہر کام میں مدد نہیں ملتی ، خود انجام پایا۔

https://www.youtube.com/watch؟v=amn23NFDXqM

یہ بھی بتاتا ہوا چل رہا ہے کہ پاکستانی نژاد ڈاکٹر نوزیر خواجہ جرمنی کی فرائی (فری) یونیورسٹی میں علمِ سیارگان (پلینٹری سائنس) کی ماہر جنوری کی سائنسدانوں کی ایک ٹیم 2018 اور پھر 2019 میں زحل کی چاندی اینسیلاڈس کا ایک اہم نامیاتی سالمہ ہے۔ (آرگینک مالیکیول) دریافت جو زندگی کا وجود پزیری کے نقطہ نگاہی سے بہت اہمیت رکھتی ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: پاکستانی سائنسدان زحل کے چاند پرزندگی سے متعلق اہم مرکب دریافت والایا

مذکورہ ویڈیو میں ملازمین نے تمام تحقیقات کے بارے میں بتایا تھا کہ اس نظام شمسی کو اس چمک دار ترین چاند ‘اینسیلاڈس’ کی موٹی برفیلی سطح کے نیچے ، مرکز میں نامیاتی مادے کے بارے میں بتایا گیا ہے۔ وجود میں کچھ ہے اور پھر سمندر سے باہر نکل جا رہا ہے جس طرح سے ٹھنڈ سے باہر جا رہا ہے۔

اینسیلاڈس کی زندگی سے متعلق اہم سالمات اور اولنلن ممکنہ تبلیغ ہوئی جب سیارہ زحل کی سمت بھیجے گئے خلائی مشن ” کیسینی ” اینسیلاڈس کے جنوبی قطب قریب سے قریب پہنچے ، وہاں سے ہٹائے گئے لوگوں کی جماعتیں تیز رفتار گیسوں کے ساتھ موجود تھیں۔ ساتھ منجمد پانی بھی دریافت تھا۔

بعد ازاں 2018 اور 2019 میں ڈاکٹر نوزیر خواجہ نے اپنی ٹیم کو سمجھایا کہ وہ انیسلاڈس پر واقعہ کے سالمات موجود ہیں جو زندگی کی بنیادی سہولیات فراہم کرتے ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here