جاپان میں شادی کے رشتے جوڑیں اب کمپیوٹر سافٹ ویئر اور مصنوعی ذہانت سے مدد لی جا رہی ہو۔  فوٹو: فائل

جاپان میں شادی کے رشتے جوڑیں اب کمپیوٹر سافٹ ویئر اور مصنوعی ذہانت سے مدد لی جا رہی ہو۔ فوٹو: فائل

ٹوکیو: جاپانی حکومت نے ملک میں شادی سے پہلے بے ربطی اور تیزی سے کم آبادی میں اضافے کو بڑھاوا دیا ہے کنوؤں کی جماعتوں کے رشتے کرینے کے مصنوعی ذہانت (آرٹیفیشل انٹیلی جنس یا اے آئی) کا استعمال کیا ہے۔ اس کے علاوہ شادی کا عمل ایک دماغی اور نفسیاتی رحجان ‘ایموشنل کوشنٹیٹ’ یا ای کیو کو بھی استعمال کرنا ہے۔

اس منصوبے میں خطیر رقم خرچ ہوتی ہے اور اس کی بنیاد پر عوام کو جوڑنا ہوتا ہے۔ اس کی ایک اور تشخیص کی وجہ یہ ہے کہ جاپان میں آبادی کی شرح کم ہورہی ہے اور بوسیدہ افراد کی آبادی بڑھ رہی ہے۔ بارش 8 لاکھ 65 ہزار کم تھی جو ایک نیا ریکارڈ بھی ہے۔ ملازمین کی وجہ سے جاپان میں پانی کی پیدائش کی شرح بہت کم ہے۔

مصنوعی ذہانت سے رشتے کرینے والے نظام کے لئے دو ڈالر کی رقم رکھی گئی ہے۔ اس کے علاوہ مختلف شہروں کی مقامی حکومتیں بھی سبسڈی دی ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ بالخصوص جاپانی لوگوں کی اپنی کیریئر میں ایک خاص مقام پر پہنچنا ہے اور وہ شادی سے کتراتی ہیں۔ یہ مردم بیزاری شادیوں کے بحران کی وجہ بن رہی ہے۔ دوسری شادیوں میں صرف ظاہری واقعات ، عمر اور آمدنی ہی مصنوعی ذہانت کے علاوہ بہت زیادہ اہم بات ہے جو اہم شخصی خواص عیاں ہیں۔ اس سے کنوؤں کی جماعتیں دلچسپی ، مشاغل اور اقدار سے لگاؤ ​​سامنے آرہی ہیں۔

خبروں کے مطابق ، اب مصنوعی ذہانت کو رشتے والی والی روایتی عورت کی جگہ کا استعمال کیا ہے اور اس کی وجہ سے جاپانی کابینہ میں کیا ہوا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ آپ کی شادی سے متعلق نوجوان لوگوں نے شادی کی کوششیں کیں اور گھریلو آبادی کوبڑ پروگرام میں مددگار حصہ حاصل کریں۔

اندازہ جات 2017 میں 12 فیصد 80 لاکھ آبادی کی گھڑیوں کی رفتار کی طرح تھی ، لیکن صدی کے اختتام تک صرف 5 سال سے کچھ عرصہ پہلے رہائش پذیر تھا۔ اسی وجہ سے اپنے آپ کو ہر سطح پر کام کرنا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here