ہمارے مستقبل کے بارے میں بہت زیادہ امید ہے ، امید ہے کہ مشکل دوری کو ختم کرنا ہے ، سابقہ ​​ٹیسٹ اسپنر (فوٹو: فائل)

ہمارے مستقبل کی باتیں بہت پریشان ہوں ، امید ہے کہ مشکل دوری کو ختم کرنا ہے ، سابقہ ​​ٹیسٹ اسپنر (فوٹو: فائل)

کراچی: اسپاٹ فکسنگ میں تاحیات پابندی کی سزا پینے والوں نے دنیش کنیریا کو بتایا تھا کہ یہ توقع ہے کہ میری مشکل دوری ختم ہوجاتی ہے اور پروفیشنل کرکٹ کے دروازے بھی اس سے دور رہتے ہیں۔

اسپاٹ فکسنگ جرم میں تاحیات پابندی کا شکار پاکستان سابق ٹیسٹ اسپنر دنیش کنیریا نیشنل سینئرز کرکٹ ٹورنامنٹ میں عمدہ بولنگ کا شہر کرڈالا ، 21 ویں نیشنل سینئرز کپ (سدرن علاقہ) میں ہفتہ کو نیا ناظم آباد اسٹیڈیم پر 39 سالہ لیگ کے بولک بولر تھا۔ اس نے آئی سی گلوبل کی انتظامیہ کو فیکٹ ڈیٹ کے مقابلہ میں 4 اوورز میں 25 رنز کے ساتھ 4 کھلاڑیوں کو میدان بدر کیا۔

یہ پڑھیں: دنیش کنیریا نیشنل کرکٹ میں واپسی کے سندھ ہائیکورٹ پہنچ گئے

میچ کے بعد نمائندہ ایکسپریس سے گفتگو کرتے ہوئے دینیش کنیریا نے کہا کہ اس کی کارکردگی بہت خوشی ہے اور اس کا تسلی بخش واقعہ اس کے مستقبل کا مستقبل بہت پریشان ہے ، امید ہے کہ میری مشکل دور کی وجہ سے جلد ہی اس کا خاتمہ ہوگا اور پروفیشنل۔ کرکٹ کے دروازے پر بھی کھلونے چلیں گے ، وٹرنز کرکٹ میں کمپنی کی پابندی ہے۔

دنیش کنیریا کے ویٹرن کرکٹ سے پی سی سی کا کوئی تعلق نہیں ، ترجمان

درس اثنا پی سی بیٹر کا ترجمان ہے کہ دنیش کنیریا ویٹرن کرکٹ سے پی سی سی کا کوئی تعلق نہیں ، پاکستان وٹرنز کرکٹ ایسوسی ایشن بورڈ سے الحاق نہیں ، کنیریا پی سی سی سے منظور شدہ کرکٹ بورڈ پر پابندی ہے۔ پی سی سی کے پینل میں امپائرز غیر الحاق شدہ ایسوسی ایشن کے ایونٹ میں بھی فرائض انجام دینے کے لئے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان کے دوسرے ہندو ٹیسٹ کرکٹر دنیش کنیریا نے 61 مرتبہ میچ میں 261 وکٹ حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ 18 ون ڈے انٹر نیشنل میچز میں 15 کھلاڑیوں کو آوٹ کیا ہوا ، 16 دسمبر 1980 ء کو کراچی میں کراچی کے دورے پر آنے والے افراد دنیش کنیریا کا مقابلہ ستمبر 2010 ء میں ہوا تھا۔ میں انگلش کاؤنٹی اسیکس کے میچ میں بے قیدی ہونے کا مظاہرہ کرتا ہوں لیکن اس کے بعد پولیس نے ابتدائی تحقیقات کی جس کا انکشاف ہوا تھا۔

فروری 2012 ء میں انگلینڈ کے کرکٹر میرون ویسٹ فیلڈ نے اسپاٹ فکسنگ کے معاملات کے دوران سماعت دنیش کنیریا کو مورد مقدمہ چھہریا بتایا تھا ، جس کے بعد کے سالوں میں انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ نے دنیش کنیریا پر تاحیات پابندی عائد کر دیا تھا۔

جون 2013 ء میں پابندی کے خلاف اپیل مسترد ہونے والی دنیش کنیریا اکتوبر اکتوبر ء ء ء میں میں اسپاٹ فکسنگ میں ہونے والے واقعے کے اعتراف کے بعد معافی مانگنے والی تھیی۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here