سام سنگ نیپہلی مرتبہ تھری ڈی ہولوگرافک ڈسپلے پیش پیشی ، لیکن ابھی یہ کمرشل فون بہت دور ہے۔  فوٹو: نیوسائنٹسٹ

سام سنگ نیپہلی مرتبہ تھری ڈی ہولوگرافک ڈسپلے پیش پیشی ، لیکن ابھی یہ کمرشل فون بہت دور ہے۔ فوٹو: نیوسائنٹسٹ

جنوبی کوریا: اسمارٹ فون کی تاریخ میں پہلی مرتبہ سام سنگ نے ‘ہولوگرافک’ ڈسپلے کی پیش کش کی تھی ، جس کی بدولت اب فون پر تھری ڈی ڈسپلے کا لطف اٹھایا جاسکے اور کسی بھی منظر میں مختلف زاویوں سے دیکھنے کی صلاحیت موجود تھی۔

اس اہم پیش رفت کو سام سنگ کا تُرپ پتّا نے کہا۔ جنوبی کوریا میں سام سنگ ایڈوانسڈ انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی کی ایک بڑی بات ہے ، ‘ہم بہت پتلے ہولوگرافک ڈسپلے کے پہلا عملی مقام کی حیثیت رکھتے ہیں ، جس کا سب سے بڑا واقعہ ہی واقعہ ہے۔’

یہ ہولوگرافک ڈسپلے روشنی کی شعاعوں کو کچھ اس طرح کے مرتب کرتی ہے کہ وہ مجازی طور پر تھری ڈی ڈسپلے کو ظاہر ہوتا ہے۔ یہ کسی بھی عدلیہ اور خاص بیرونی آلات کی ضرورت نہیں ہے۔ اس وقت جتنا بھی ہولوگرافک ڈسپلے ہیں ، وہی وقت صاف اور بھرپور رہتا ہے۔ زاویہ بدل رہی ہیں۔

https://www.youtube.com/watch؟v=xqUVgSV7OI4

سام سنگ کی ٹیم نے ہولوگرافک ویڈیووں کو دیکھا اور 30 ​​گناہ تک بڑھا دیا اور اس کی روشنی میں روشنی (بیک لائٹ) ڈالر والے والا نظام بنایا گیا۔ ہونگ سیوک کا مقابلہ کرنے والا بیک لائٹ ہولوگرام سے متاثرہ افراد کی سمت دھکیلا علاج ہے۔ اس عمل میں آنکھوں میں تھکن نہیں ہے اور آپ بہت سارے تھری ڈیڈی سے دیکھتے ہیں۔

فطرت کے طور پر دونوں آنکھیں دیکھنے کی ایک جگہ کے دو فوٹو بناتی ہیں جس کے منظر میں گھرائ کا اثر ہوتا ہے اور نگاہوں پر زور نہیں پڑتا ہے۔ یہ رنگ ” اسٹیٹریوسکوپک ریسرین ” کہلاتی ہے۔ اس کے برخلاف ، خاص طور پر عینک رہائشی کرتھری ڈی فلم پر آنکھوں پر زور پڑتا ہے اور آنکھوں کا پٹہ (عضلات) تھک راستہ۔

سام سنگ کا ہدف ہے جہاں ہولوگرافک ڈسپلے بنائے جانے کا ہر طرح سے حقیقی منظر پیش کرتا ہے ، جہاں لوگ حقیقی منظر اور تخلیقی واقعات کے درمیان فرق نہیں رکھتے ہیں۔ اس وقت ڈسپلے کی موٹائی ایک سینٹی میٹر ہے جو اسمارٹ فون پر بہت زیادہ ہے۔ اگلے مرحلے میں مزید پتلا کیا ہوگا۔

اس طرح اب بہت جلد ٹبلٹ ، اسمارٹ فون اور لیپ ٹاپ اسمارٹ فون ڈسپلے عام ہوسکیں گے۔ اس ٹیکنالوجی کی روداد نیچر کمیونی کیشن میں شائع ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here