مقبوضہ کشمیر میں بھی دہشت گردوں کے گروپوں کی کوششیں ، پاکستان میں وارفاقی اور بدامنی پھلائی جائیگی ، رپورٹ۔  فوٹو: فائل

مقبوضہ کشمیر میں بھی دہشت گردوں کے گروپوں کی کوششیں ، پاکستان میں وارفاقی اور بدامنی پھلائی جائیگی ، رپورٹ۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: ہندوستان کے خطوں میں ایڈم استحکام سے متعلق ” گریڈ ڈبل گیم ” منصوبے پر عمل درآمد شروع ہوا ہے۔

ہندوستان میں امن عمل کو سبوتاژکرنے اور خطے میں ایڈم استحکام سے متعلق ” گریٹ ڈبل گیم ” پروجیکٹ پر عمل درآمد شروع ہوا ہے ، اس منصوبے کے تحت کسی کو مل کر افغانستان کو بدامنی پھلائی جائیگی نے کہا ہے۔ ریاست سے ثابت قدمی کرنا بھی ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں دہشتگرد گروپوں نے کوکیوں کی موجودگی کی وجہ سے پاکستان میں بھی واقعات پیش آئے۔

ایک رپورٹ کے مطابق بھارت نے نکسل مومنٹ کے خلاف جنگ بھی جاری رکھی ہوئی ہے جو پوری دنیا میں واقع ہے۔

بھارت کے خطےی میں جاری گریڈ ڈبل گیم جو بڑے عرصے سے جاری ہے ، بے نقاب ہوچکیوں کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ یہ گریٹ ڈبل گیم 2019 شروع میں شروع میں ء میں جاری ہے ۔ابتدائی نتائج 20 2020 ء ء میں اس کا ہدف تھا لیکن اس کی وجہ کورینا کی وجہ سے تھا۔ آیا۔

2021 آغازء کے آغاز کے ساتھ ہی نریندر مودی نے اس گریٹ ڈبل گیم پر دوبارہ عمل شروع کیا۔ اس سے پہلے اقوام متحدہ کے جنوبی ریاستوں کیرالہ اور اس سے پہلے دہشت گردی کے گروپ گروپوں میں نشاندہی کر کے چیکی واقعکنگز کالج لندن میں ڈیفنس اسٹرڈیز کے استاد اورے ناش پلوال کی کتاب میری دشمنی کا دشمنی۔ اس گریٹ ڈبل گیم کو بے نقاب کیا ہوا ہے۔

اس رپورٹ کے مطابق بھارت کی چانکیہ کی پالیسی اپنائے ہوئے خواتین نے کلک میں سیدھے گوردوارے پر حملہ کرایا گیا جس کا ماسٹر مائینڈ ایک بھارتی لڑکی نکلا۔ ہندوستان افغانستان کو ہر قیمت پر قیمت لگانا۔ پاکستان بار ہا مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

بھارت کے مغربی سرحد سے بلوچستان اور خیبرپختونخواہ میں عدم استحکام کے لئے کوششیں کر رہے ہیں ، پاکستان کے فرقہ وارانہ بدعنوانی کرائے جانے والے ہیں ، کراچی اور مچھلی کے حالیہ واقعات میں اسی طرح کے واقعات ہیں۔

اوئے ناش پلوال کی کتاب جو 2017 ء میں شائع ہوئی تھی جس کا مطلب مودی حکومت ہے ، افغان طالبان کو بھی جال میں پھانسنے کی بہت کوشش ہے ۔اس کتاب میں ” بلوچ اینڈ پشتون کارڈ’کا پورا باب لکھا ہوا تھا ‘ اینڈ پشتون کارڈ بھارت کی گریٹ گیم کا اہم حصہ ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here