عدالتوں میں انتہا پسند تنظیموں کی ہندتوا پالیسی سامنے آتی ہے بس نظر آتی ہے ، رپورٹ۔  فوٹو: فائل

عدالتوں میں انتہا پسند تنظیموں کی ہندتوا پالیسی سامنے آتی ہے بس نظر آتی ہے ، رپورٹ۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: ہندوستانی عدالتیں انصاف فراہم کرتی ہیں جس سے ہندوستانی بربریت اور سفیقی مثال کے طور پر دنیا میں سفر نہیں کرتے۔

ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 14 سال گزرنے کے بعد اس سے متاثرہ افراد کو انصاف سے دوچار کیا جائے گا۔ 20 مارچ 2019 کو ریاست ہریانہ میں تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کی عدالت نے سمجھا کہ بم دھماکے کرنے والے واقعات میں 4 افراد کو بریک ڈرائیو ، بم دھماکوں میں بھارتی فوج کی موجودگی کی خدمات حاصل کرنا تھی۔

عدالتی فیصلے میں سوامی آنند ، کمل چوہان ، راجندر چوہدری اور لوکیش شرما کا ثبوت تھا کہ فقدان کا حوالہ دیا گیا تھا جنوری کو اس کا جائزہ لیا گیا تھا ، اپریل 2018 میں ان کی عدالت میں ایک مسجد کا حملہ ہوا تھا۔ تمام 11 افراد کو حیدرآباد میں 6 افراد ہمیشہ رہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here