برطانیہ کے 12 سال کے بعد 45 مرتبہ مقناطیس نگل کے لئے اس کے پیٹ پر دھات چپکا سکیں ہیں۔  فوٹو: فائل

برطانیہ کے 12 سال کے بعد 45 مرتبہ مقناطیس نگل کے لئے اس کے پیٹ پر دھات چپکا سکیں ہیں۔ فوٹو: فائل

لندن: برطانیہ کے ایک لڑکے نے اس کے بعد 54 مقناطیس کے لئے دعا کی کہ وہ اس طرح سے پیٹ پر لوہے کے ٹکڑے ٹکڑے کرسکتا ہے یا نہیں۔

12 برسوں کے رائل موریسن کے سلسلے میں گریٹر مانچسٹر سے کسی بھی تجربے پر 54 چھوٹے اور گول مقناطیس نگل کے لئے کوئی بات نہیں ہے۔ وہ دیکھنا ہی نہیں چاہتا تھا۔ رائل کی طبعیت اتنی بگڑ رہی ہے کہ وہ موت کے کنارے جاپانیہنچا اور مسلسل 6 گھنٹے اس کی جان بچائی کے بعد واقعہ میں آگیا ہے۔

رائل کو یہ مقناطیس کرسمس تحفے میں سیکشن ہو وہ 5 جنوری میں نگل گئی۔ جب ایک مقناطیس جسم سے باہر بھی نہیں آیا تو اس کی تشخیص نہیں ہوئی اور اس کے والدہ کو بھی اطلاع دی۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ سب گول مقناطیس باہم چپک کے مقام پر واقع ہے اور آن لائن لوگوں کی معتبریت میں واقع ہوئی ہے۔ اس کی صرف ایک ماں ہی نہیں تھی لیکن صرف دو مقناطیس ہی رہتی ہیں لیکن ان کی تعداد غیرمعمولی طور پر بہت زیادہ ہوتی ہے۔

لیکن اس سے پہلے لڑکے کے روزہ تک پہنچنے والے درد کے شکار تھے۔ پانی پینے سے یکسر رہائش پذیری ہر وقت الٹیاں آتی اکثریت اور خیال ہوتا ہے شاید مقناطیس گولیوں کو ان کے اندرونی نظام کو چھید نہیں تھا۔

12 سالہ رائل سائنسی تجربات اور یہ واقعہ بھی اسی جستجو کی وجہ سے پیش آیا ہے۔ اس کے بعد رائل کو کوسٹرسٹر چلڈرن واقع میں داخل کرایا گیا ہے۔ ایک لمبے حادثے کے بعد پھنسی مقناطیسی گولیاں نکالی ہوئی ہیں۔

اس سے پہلے چھٹی ہوئی لیکن ریلی موت کے منہ سے دوبارہ لوٹ آیا۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here