لاشوں قدیم شہر کے زیر زمین چیمبر کی کھدائی کے دوران ملیں ، فوٹو: ٹویٹر

لاشوں قدیم شہر کے زیر زمین چیمبر کی کھدائی کے دوران ملیں ، فوٹو: ٹویٹر

روم: اٹلی میں آثار قدیمہ ماہرین کو کھدائی کے دوران دو افراد 2 ہزار سالانہ جلدی جلدی لاشیں ملی جو حیران کن حد تک غیر معمولی حد تک محفوظ ہیں۔

عالمی خبر رساں ادارے کے پمپے سے برآمد ہونے والی والی لاشیں سنہ 79 ء ء کی کی کی ہیں ہیں ہیں جب جب آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ آ اس میں ایک لاش 30 سے ​​40 سال تک کا شخص ہے جب عمر کے ممکنہ طور پر 18 سے 23 سال تک رہنا ہے۔

اٹلی کے وزیر کلچر نے کہا کہ عمر میں نسبتاً بڑا شخص تھا جو اس نوجوان عورت کے لباس اور جسم پر بہت زیادہ مشقت کرنے والا غلام تھا۔ نہیں ہے۔

زیر زمین چیمبر سے ملنے والی لاشوں کی ہڈیاں اور دانت محفوظ ہیں ، آثار قدیمہ اہل عسکری ہڈیوں پر گوشت کی جگہ پلاسٹر چڑھایا جس کے جسمانی خدوخال نمایاں ہونے کا انکشاف ہوا۔ فرانزک جائزے کے بعد مزید حقائق سامنے آنے کا امکان ہے۔

پومپے آثار قدیمہ کے ڈائریکٹر ماسیمو اوسانا نے بتایا کہ سنہ 79 ء میں روم کے شہر پومپئی میں آتش فشاں پہاڑ کے پھولوں کے بعد لوگوں کو ممکنہ طور پر پناہ ڈھونڈے ڈھونڈتے اس چیمبر تک پہنچا تھا ، جب تک وہ لاوے کی راہ پر نہیں آیا تھا۔ اور تھرمل شاک کی وجہ سے ہمیشہ رہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here