امریکی ماہرین ہیہائیڈروجیل اور ایئروجیل کے ملاپ سے دس گھنٹے تک سردرہنے والا سسٹم بنا ہوا ہے جس کا مرکزی خیال اونٹ سے لیا گیا ہے۔  فوٹو: نیوسائنٹسٹ

امریکی ماہرین ہیہائیڈروجیل اور ایئروجیل کے ملاپ سے دس گھنٹے تک سردرہنے والا سسٹم بنا ہوا ہے جس کا مرکزی خیال اونٹ سے لیا گیا ہے۔ فوٹو: نیوسائنٹسٹ

بوسٹبن: سائنسدانوں نے بجلی کی کارخانے سے لے کر پندرہ راز فاشوں کا فائدہ اٹھایا اور اب اونٹ کی کھال کی طرز پر ایک ہائیڈروجیل تیار کی گئی جو بجلی سے دور رہ گئی تھی۔

جیل کی باریک جھلی عین اونٹ کی ہل جیسا کام کرتی ہے اور روزانہ انسٹولیشن یعنی ٹنڈک فراہم کرتی ہے جس کی وجہ سے اس کی رکھی ہوتی ہے ، بجلی کی بجلی بھی بہت کم ہوتی ہے جو سرد درجہ حرارت پر رکھی جاسکتی ہے۔

دنیا بھر کے تجربہ خانوں میں ہائیڈروجیل پر کام ہورہا ہے۔ پانی بھرنے والے مادے کے زخم کو نمونہ بناتے ہیں ، اس سے دوائیوں کو دور کرنے کا اشارہ مل جاتا ہے۔ پانی کی وجہ سے کسی کو برقی توانائی نہیں ملتی ہے۔ لیکن اس کا اثر جلد ہی ختم ہوجاتا ہے اور ماہر ہیں جو ہائیڈروجیل کی نمی اور ٹنڈک دے رہی ہیں جس کا وقت بہت طویل عرصے تک رہ گیا ہے۔ اب صحرائیی جہاز اونٹ کی دال پر غور کرنے کے بعد سائنسدانوں کو طویل عرصے تک سرڈوکاں ہائیڈروجیل کا خواب ممکن ہے۔

میساچوسیٹس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی (ایم آئی ٹی) کیجیفری گراسمین اور ان کے ساتھیوں نے پہلے اونچی کا بغور مطالعہ کیا کہا تھا۔ اس کے بعد اس نے دو پرتوں میں پایا۔ اس کے بعد اس نے اس عمل کو مصنوعی طور پر نقل کی کوشش کی جس سے پہلے ہائیڈروجیل بنایا گیا تھا اور باریک ایئرو جیل میں اس کی دوسری تقریب میں خردبینی چھدی بنائے جو پانی کے رس رس پر واقع رہائش پذیر ہے۔ اس طرح یہ دوہری پرت والے ہائیڈرجیل عین اونٹ کی کھال کی طرح کام کرتے ہیں۔

پہلا ہائیڈروجیل اونٹ کے جسم میں پسینے کی غدودی کی طرح کام کرتا ہے یعنی پانی کا بخارات بن اڑاتا رہتا ہے اور خود کو سرد ہوتا ہے۔ لیکن اس کے اوپر کی ایک اورہوا بھرا ایئروجیل اونٹ کی کھال کی طرح کام ہے۔ اس طرح بڑے انسولین ملٹی ہیں ، پانی دھونے والے دھیرے ضائع ہیں اور اس میں رکھی اشارہ نہیں ہے ، بجلی کی توقع بہت دیر تک ہے۔

یعنی اس عمل میں بخارات بننے (ایوپوریشن) اور حرارت سے باہر کی آمدنی (انسولیشن) کو روکنے کا دوہرا نظام ایک وقت میں کام کرنا ہے۔ اس تجربہ گاہک میں آزمائش ہوگئی ، وہ ہائیڈروجیل اور ایئروجیل میں رکھی ہوئی تھی ، اشیا بقیہ ماحول سے سات درجے کی سینٹی گریڈ تک پہنچ گئی تھی۔ عام طور پر ہائیڈروجیل کام نہیں کرتے ہیں اور نہ ہی بہت دیر تک ٹھنڈا رہتے ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ اگر صرف ایک ہائیڈروجیل میں ہی ایئروجیل کی چادر لپیٹ دی جاتی ہے تو وہ 250 گھنٹوں کی ٹھنڈک ملٹی کے دس واقعات ہیں۔ اس دوران غزوہ کوڈ سرٹیفکیٹ ہے ، ویکسین سے دوسری جگہ پہنچ گئی جاسکتی ہے اور اڈویہ میں درجہ حرارت کم درجہ حرارت پر ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here