برطانیہ ، بحرین ، کینیڈا ، میکسیکو اور سعودی عرب بھی فائدہ اٹھانے والے کورونا ویکسین کی منظوری دے رہے ہیں ، فوٹو: فائل

برطانیہ ، بحرین ، کینیڈا ، میکسیکو اور سعودی عرب بھی فائدہ اٹھانے والے کورونا ویکسین کی منظوری دے رہے ہیں ، فوٹو: فائل

واشنگٹن: امریکہ نے بھی دیسی دوا ساز کمپنی کا فائدہ اٹھانا اور جرمنی کی بائیوٹیک کمپنی کی شراکت سے تیار شدہ کورونا ویکسین کی منظوری دیدی۔

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکی شہری غذا و دوا ” ایف ڈی اے ” کے کم ڈاکٹر ڈاکٹر اسٹیفن ہان کی جانب سے جاری کردہ بیان میں فائدہ اٹھانے والے کورونا ویکسین کو محفوظ معاہدہ کا مطالبہ کیا گیا ہے جس کا استعمال ہنگامی استعمال کی منظوری دیدی ہے۔

یہ خبر پڑھیں: بحرین کورونا ویکسین کی منظوری دینے والا پہلا اسلامی ملک بن گیا

فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے کم وبیش بیان دیا ہے جس میں ایف سی کا پہلا کوویڈ 19 ویکسین کے ہنگامی طور پر استعمال کی اجازت ہے اس کی وجہ سے وبائی بیماری سے نمونے کے لئے ایک اہم سنگ میل ہے جس میں ریاست متحدہ اور پوری دنیا میں شامل ہیں۔ لاکھوں کنبے متاثر ہوئے ہیں۔

فائدہ اٹھانے والے اپنے ویکیسین رجسٹریشن کے لئے درخواست دے رہے ہیں ایف سی کے ایک مشاورتی کونسل نے ٹرائل کے سائنسی شواہد پر جرح کی تھیی اور 22 سے 17 افراد کو ہنگامی استعمال کی سہولت دی تھی جبکہ 4 ارکان نے 16 سال سے کم عمر مریضوں کا استعمال کیا ہے۔ تحفظات کا اظہار کیا تھا؟

فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن دوا کے معیار کی جانچ پڑتال معتبر ادارہ ہے جس کی منظوری کے لئے دوائیوں کی دنیا بھر میں قابل بھروسہ سمجھی جاتی ہے۔ کئی درجن سے زیادہ ویکسینز کی دوڑ میں فائدہ اٹھانے والے ایف ڈی سے منظوری کے مصنف سبط حاصل کرتے ہیں۔

یہ خبر پڑھیں: دنیا کی پہلی کورونا ویکسین برطانیہ کی 90 سالہ عورت کوکیشن دی گئی

فائدہ اٹھانے اور بائیوٹیک کی بات چیت سے پہلے تیار شدہ والی کورونا ویکسین کی اجازت سب سے پہلے برطانیہ میں جہاں ویکسینیشن کا عمل بخوبی جاری تھا ، اس کے بعد بحرین نے بھی ہنگامی اجازت دی ہے جب وہ کینیڈا اور سعودی عرب میں بھی ہے۔ نہیں۔

دنیا بھر میں کورونا سے پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے امریکہ جہاں اس وائرس سے دوچار ہوجاتا ہے اس کی وجہ یہ ہے کہ اس مہلک وائرس سے ہمیشہ کے لئے 2 لاکھ 87 ہزار تجاوز کرگئی ہوتی ہیں۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں خیز وبا کی ویکسین کی تیاری جاری ہے ، چین کی ویکسین کی ٹرائل بھی مختلف ممالک میں جاری ہے ، روس نے بھی مقامی سطح پر تیار کردہ ویکسین کا استعمال شروع کردیا ہے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here