امریکی بحریہ کا پہلا مرتبہ انٹرسیپٹر میزائل کا مقام خلا میں موجود ہے جس سے آئی سی بی ایم کو کامیابی مل سکتی ہے۔  فوٹو: میزائل ڈیفینس ایجنسی

امریکی بحریہ کے پہلے مرتبہ انٹرسیپٹر میزائل کے کمرے میں موجود آئی سی بی ایم کو کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ فوٹو: میزائل ڈیفینس ایجنسی

پینٹاگون: امریکی بحریہ اپنی تاریخ میں پہلی بار سمندر سے ایک میزائل شکن میزائل (انٹرپرسیٹر) لانچ کیا ہے۔ اس سسٹم سے خلاء میں موجود بین البراعظمی میزائل یا (آئی سی سی ایم ایم) کو کوٹ لیا گیا ہے۔

اس عمل سے امریکی بحریہ نے میزائل ڈیفنس ایجنسی کے تعاون سے ایک ایس ایم ایم تھری ٹو کی بدولت خلا تک پہنچنے والے لوگوں کو میزائل کوکنا دیا۔ پینٹاگون کے مطابق یہ تجربہ 17 نومبر کو ہوا تھا۔ دفاعی ماہرین کے مطابق شمالی کوریا بارہا مرتبہ بین البراعظمی میزائلوں کا تجربہ کرچکا ہے اور امریکہ پر بھی اس کی لاشیں کھلی ہوئی ہیں۔ اسی تناظر میں امریکی دفاعی صورتحال بالخصوص میزائل ڈیفنس ایجنسی (ایم ڈی اے) نے اس کی جانچ کی۔

امریکی جزیرے ہوائی شمال مشرق میں واقعی رونالڈ ریگن میزائل ڈیفنس سسٹم کی تنصیبات سے یہ تجربہ کیا ہوا تھا اور اس میں میزائل انٹرسیپٹر ہر طرح کا انتخاب کرنا تھا۔

اس ایجز بی ایم ڈی نامی ایک بحری جنگی جہاز سے لانچ کیا ہوا تھا۔ اگر یہ آپ کی نوعیت کا چھٹا تجربہ تھا لیکن بحری جہاز سے آئی سی بی ایم مارگرے کا پہلا تجربہ ہوا۔ اگر یہ تجربہ اس سال مئی میں ہو تو 19 کی وبا کی وجہ سے وہ اس طرح کی ہو گی۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here