طالبان کے ہمدردی حفاظت کرنے والے پولیس اہلکار سابقہ ​​دستی بم سے بھی پہلے ، فوٹو: فائل

طالبان کے ہمدردی حفاظت کرنے والے پولیس اہلکار سابقہ ​​دستی بم سے بھی پہلے ، فوٹو: فائل

کابل: افغانستان کے صوبہ ہرات میں طالبان کے ہمراہ پولیس اہلکار اپنے ساتھی اہل اردو پر اندھا دھند کے شہری جس کے نتیجے میں 13 اہل کار ہمیشہ رہے۔

افغان میڈیا کے مطابق صوبہ ہرات کے ضلعی غوریان کی پولیس چیک پوسٹ پر پولیس اہلکار کھانا کھاتے ہیں جو 3 اہل فوجی ہیں اس سے پہلے دستی بم پھینک دیا گیا تھا اور پھر اس کے ساتھ ساتھی اہلکار اندھا دھند حملہ کر رہے تھے۔

حملہ آنا اچانک اور غیر متوقع تھا کہ پولیس اہلکار کو سنبھلنے کا موقع نہیں ملتا تھا اور 13 اہلکار رہتے رہتے ہیں۔ حملہ کرنے والے بھی پولیس اہلکار ہی ہیں جو کارروائی کے بعد اسلحہ اور گاڑیاں بھی ساتھ لے گئے۔

یہ خبر پڑھیں: افغانستان میں طالبان کے وقت صوبائی کونسل کے رکن 12 فوجی اہل ہمیشہ

ہرات پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ پولیس اہلکار کوٹھا کر تینوں اہلکاروں کے خلاف کاروائی کرتے ہیں۔ ممکنہ طور پر تین حملہ آوروں پر طالبان جنگجو تھے جنہوں نے اس کارروائی کی کوئی پولیس کارروائی نہیں کی تھی۔

صوبہ کونسل میں ایک رکن اور 12 فوجی اہلکار ہمیشہ موجود رہتے ہیں۔ دو تاریخ میں فریقین کے درمیان جاری جنگ ناکام رہی۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here