تصویر میں بائیں ڈاکٹر ڈاکٹر سیوین اینگ اور ڈاکٹر ایڈی لاؤ آپ کے ایجاد اے ایف وی ڈبلیو بلو زراعت کے ساتھ جو ایک عام کھرکی کی طرح کے کھلونے اور بند رہتے ہیں۔  فوٹو: بشکریہ یونیورسٹی آف سنگاپور

تصویر میں بائیں ڈاکٹر ڈاکٹر سیوین اینگ اور ڈاکٹر ایڈی لاؤ آپ کے ایجاد اے ایف وی ڈبلیو بلو زراعت کے ساتھ جو ایک عام کھڑکی کی طرح کے کھلونے اور بند رہتے ہیں۔ فوٹو: بشکریہ یونیورسٹی آف سنگاپور

سنگاپور سٹی: کھڑکیوں کے گھر میں روشنی اور ہوا کی ایک خوبصورت عورت ہے لیکن اس کی کھڑکی بھی نہیں ہے اور باہر بھی شور و غلظہ ہوتا ہے۔ اب سنگاپور کی انجینیئروں نے ایک اسٹریٹ ڈیزائن تیار کیا جو پہلے سے بہتر تھا اور اس میں کسی بھی طرح کی بات نہیں ہوتی تھی۔

سنگاپور نیشنل یونیورسٹی کے ماہرین نے ایک انداز میں کھڑکی بنائی کے بارے میں بتایا۔ ایکسٹک فرینڈلی وینٹی لیشن ونڈو (اے ایف وی ڈبلیو) نے اس کا علاج کیا۔ پہلے نمونے کی اونچائی 1.8 میٹر ، چوڑائی 0.88 میٹر اور موٹائی 0.15 میٹر ہے۔ اس ڈبل گلیزڈ اور دو شیشوں کے درمیان ساٹھ آٹھ سینٹی میٹر کیی کھلی جھری رکھی ہوئی ہے۔

اس کے علاوہ افقی طور پر دو وینٹ (کھلی درزیں) بھی بنائی ہو رہی ہیں۔ باہر کی چیزیں اور دوسرے کے اندر کھلونے ہیں۔ نچلی میں ایک برقی وینٹیلیشن یونٹ ایڈریس ہے جو بنیادی طور پر سیلنڈر نمایاں پنکھا ہے جو باہر کی تازہ ہوا میں پھینکتا رہتا ہے۔ یہ ہوا مختلف درزوں سے اوپر اور نیچے کی طرف رہتی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ وہ فلٹروں سے گزرتی رہتی ہے جس سے گردوغباراور آلودگی اندر نہیں جاسکتی ہے۔ دائیں اور بائیں طرف کی ہوائی خلیج بیرونی شور کو روکنے کے لئے اور روایتی کھڑکیوں کے مقابلے میں چار گناہ تک پہنچنا آتی ہے لیکن باہر کا شور رہتا ہے۔

اس کھڑکی کو جامعہ کے اندر ہی جانچ پڑتال 2019 کے دسمبر میں ہو رہی ہے۔ آخری اطلاعات کے مطابق بہت حوصلہ افزا نتائج برآمد ہوئے ہیں۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here