لیڈی ہیلتھ ورکرز کا پارلیمنٹ کی طرف سے مارچ کرنے کا اعلان

لیڈی ہیلتھ ورکرز کا پارلیمنٹ کی طرف سے مارچ کرنے کا اعلان

وفاقی دارالحکومت میں لیڈی ہیلتھ ورکرز نے آج کی پارلیمنٹ میں مارچ کا اعلان کیا تھا اور پولیس کے ساتھ جھڑپ بھی ہوئی تھی۔

اسلام آباد میں ڈی چوک پر لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دھرنا چھٹے روز کا دن بھی جاری ہے۔ پولیس نے دھرنے کی طرف جانے والے تمام راستے پر بندھے ہوئے تھے اور خاردار تاروں سے لے کر سیل کرپٹ ہیں۔

پولیس نے مزید لیڈی ہیلتھ ورکرز کو روکنے کی کوشش کی تو ہیلتھ ورکرز آگ سے آگاہ تھے اور پولیس کے ساتھ جھڑپ تھے اور ہیلتھ ورکرز نے پولیس کو سیفٹی کٹس کو کھینچ دیا تھا۔

اس دوران دھکا لگ رہا ہے لیڈی ہیلتھ ورکرز نے حکومت اور پولیس کے ساتھ ہونے والے نعرے بازی کے بارے میں پولیس کو ڈی ڈی چوک سے روکنے کا مطالبہ کیا۔ اسلام آباد میں میٹرو بس سروس بھی معطل کردی گئی۔

لیڈی ہیلتھ ورکرز نے حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ ایک اور ڈی ڈی لائن پر یقین رکھیں آج پارلیمنٹ کی طرف سے مارچ کا اعلان کیا گیا ہے۔ صدر لیڈی ہیلتھ ورکر رخسانہ انور کی بات ہے آج کسی کو بھی رکاوٹ سے روکنا نہیں ہے۔



Source by [author_name]

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here