ویزہ استثنیٰ کے ساتھ دیگر تین معاہدوں پر بھی دستخط کی ، فوٹو: اے ایف پی

ویزہ استثنیٰ کے ساتھ دیگر تین معاہدوں پر بھی دستخط کی ، فوٹو: اے ایف پی

تل ابیب: اسرائیل اور متحدہ عرب امارات نے چار معاہدوں پر اتفاق رائے کیا ہے جن میں ایک معاہدہ کیا گیا ہے جو ملک میں داخلہ لے رہے ہیں اور ویزے سے استثنیٰ دیدیہ ہوئے ہیں۔

عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق متحدہ عرب امارات سے اسرائیل پہنچنے والے افراد کے لئے نتن یاہو سے مل رہے ہیں ، قبل ازیں اہم معاہدوں میں 4 معاہدوں پر اتفاق رائے ہوا تھا جس کے بعد نیتن یاہو معاہدے پر دستخط کردیئے گئے تھے۔

اس میں ایک معاہدے کے تحت دونوں ممالک سے ویزا فری پالیسی پر اتفاق کیا جاسکتا ہے جس کے تحت دونوں ممالک کے پاس ویزے بھی مخصوص شہروں میں سفر نہیں ہونے پائے گیں۔

یہ خبر پڑھیں: عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان امن کا معاہدہ ، سفارتی تعلقات کی فہرست کاآغندیہ

“بینجمن نتن یاہو” آپ کے پاس وفادار اسرائیلی دورے اور معاہدے پر اتفاق رائے سے ‘سنہری’ معاہدہ ہوا۔

اس معاہدے کے بعد عرب دنیا میں اماراتی پہلے ملک بن جا گے گے جنیٰ اسرائیل میں داخلے کے لئے اجازت نامے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

یہ خبر بھی پڑھیں: متحدہ عرب امارات کی پہلی کمرشل پرواز کی اسرائیل آمد

واضح رہے کہ عرب ممالک میں سے 1979 1979 1979 اور ء اور اردن نے 1994 میں اسرائیل کے ساتھ معاہدہ کیا تھا جب اس کے بعد کئی سال بعد متحدہ عرب امارات اور بحرین نے بھی اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم رکھے تھے۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here