اقوام متحدہ کے اتحاد تہوار کے نمائندے اعلی مگیل اینجل موراتینو نے گستاخانہ خاکوں سے متعلق بڑھتی کشمیری پر گہری تشخیص کا اظہار کیا ہے (فوٹو ، فائل)

اقوام متحدہ کے اتحاد تہوار کے نمائندے اعلی مگیل اینجل موراتینو نے گستاخانہ خاکوں سے متعلق بڑھتی کشمیری پر گہری تشخیص کا اظہار کیا ہے (فوٹو ، فائل)

نیویارک: اقوام متحدہ کے اتحاد تہوار کے نمائندہ اعلی مگیل اینجل موراتینو نے گستاخانہ خاکوں کے معاملات پر بڑھتی کشمیری اور بے چینی کے بارے میں گہری تشخیص کا اظہار کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارہ کے بارے میں اس نے کہا کہ وہ دنیا میں امن اور بھاری چارے کی فضا میں پہنچ رہا ہے اور اس سے مذاہب کا باہمی احترام بہت ضروری ہے۔ مذاہب اور مقدس شخصیات کی توہین سے سوسائٹی میں منافع اور شدت پسندی کو بڑھاوا ملتا ہے۔

اس کی بات یہ ہے کہ آزادی اظہار رائے کا اس طرح ہونا ضروری ہے جس میں ایک مذاہب ، ان کی تعلیم اور اصولوں کا احترام بھی ملحوظ تھا۔

یہ خبر بھی ہے: گستاخانہ خاکوں اور فرانسیسی صدر کے اسلام مخالف بیان پر مسلم دنیا سراپا احتجاج

واضح رہے کہ فرانس میں اسلام اور اس کی آزادی کے بارے میں مسلسل نفرت انگیز بیانات اور اقدامات سامنے آرہے ہیں۔ ماہ ماہ رسوائے زمانہ اخبار شارلی ہیبڈو کی ایک مرتبہ پھر توہین آمیز خاکوں کے اشارے ، فرانس میں تشخیص اور فرانسیسی صدر کی اسلام آباد کے بیانات کے بعد ہونے والے غم میں غم اور غصے کی لہر دوڑ ہوئی ہے اور پوری دنیا میں مسلمان سراپا احتجاج ہیں۔

متعلقہ خبریں:



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here